The news is by your side.

Advertisement

وفاقی حکومت کی نیب کے قانون میں مزید ترمیم کی تیاری

اسلام آباد : وفاقی حکومت کی ایک بار پھر نیب کے قانون میں ترمیم کی تیاری کرلی، جس کے تحت نیب پچاس کروڑ روپے سے کم کرپشن کیسز کی تحقیقات نہیں کرسکے گا۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے نیب کےقانون میں مزیدترمیم کی تیاری کرلی، قومی اسمبلی میں نیب دوسری ترمیم بل دو ہزار بائیس کا مسودہ پیش کر دیا گیا۔

نیب کے دوسری ترمیمی بل کے تحت نیب پچاس کروڑ روپے سے کم کرپشن کیسز کی تحقیقات نہیں کرسکے گا۔

نئے بل کے مطابق احتساب عدالت کے ججز کی تقرری سے متعلق صدر کا اختیار بھی ختم ہوگا اور پراسیکیوٹرجنرل نیب کی مدت ملازمت میں 3 سال کی توسیع کی جاسکے گی۔

ترمیمی بل کے تحت نیب قانون کے سیکشن سولہ میں بھی ترمیم کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ جہاں جرم کا ارتکاب ہوگا ملزم کیخلاف اسی علاقے میں مقدمہ چلایا جائے گا۔

ترمیم شدہ بل میں کہا ہے کہ سیکشن انیس ای میں بھی ترمیم کرتے ہوئے تجویز دی گئی کہ نیب کو ہائی کورٹ کی مدد سے نگرانی کی اجازت دینے کا اختیار واپس ہوگا۔

ملزمان کے خلاف تحقیقات کیلئے دیگر سرکاری ایجنسی سے مدد نہیں لی جاسکے گی اور ملزم کو الزامات سے آگاہ کیا جائے گا تاکہ وہ اپنا دفاع کرسکے۔

بل کے مطابق احتساب عدالتوں کے ججز کی تقرری کا اختیار حکومت کے پاس رہے گا، سیکشن بی اکتیس میں بھی ترمیم ہوگی، جس کے تحت چیئرمین نیب فرد جرم سے پہلے ریفرنس ختم کرنے کی تجویز کرسکیں گے۔

بل وزیرمملکت شہادت اعوان نے بل پیش کرتے ہوئے بل جلد منظور کرانے کی درخواست کی اور کہا کہ قائمہ کمیٹی کوہدایت کی جائے دو تین روز میں بل کوفائنل کرے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں