The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد میں 14 اگست سے پلاسٹک بیگ کے استعمال پر پابندی عائد

اسلام آباد : وزیر مملکت موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے اعلان کیا وفاقی دار الحکومت اسلام آباد میں 14اگست یوم آزادی کے روز سے پلاسٹک کے بیگ کے استعمال پر پابندی ہوگی۔

تفصیلات کے مطابق وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی زرتاج گل نے موسمیاتی تبدیلی کے موضوع پر منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی دار الحکومت اسلام آباد میں 14اگست یوم آزادی کے روز سے پلاسٹک کے بیگ کے استعمال پر پابندی کا اعلان کردیا۔

وزیر مملکت برائے موسمیاتی تبدیلی کا کہنا تھا کہ اسلام آباد سب سے پہلا دارالحکومت ہوگا، جہاں پلاسٹک کے بیگز کے استعمال پر پابندی عائد کی جائے گی۔

زرتاج گل نے کہا کہ پاکستان سمیت دنیا بھر میں موجودہ جنریشن موسمیاتی تبدیلیوں سے سب سے زیادہ متاثر ہوئی ہے ، جبکہ پاکستان قدرتی آفات بشمول سیلاب ، شدید گرم موسم ، پانی کی کمی سے متاثرہ ممالک میں ساتویں نمبر پر ہے۔

ان کا کہنا تھا موسمیاتی تبدیلی پر وزیراعظم عمران خان کی بہت زیادہ توکہ ہے اور وہ اس حوالے سے خصوصی دلچسپی لے رہے ہیں فوکس ہے، وزیراعظم عمران خان ملک کو درپیش موسمیاتی تبدیلی کے اثرات سے بخوبی آگاہ ہیں ۔

وزیر مملکت نے مزید کہا کہ موسمیاتی تبدیلی کے باعث پاکستان کو سیلاب، پانی کی کمی، ہیٹ ویوز سمیت دیگر مسائل کا سامناہے ، ان مسائل پر قابو پانے کیلئے حکومت نے بلین ٹری سونامی سمیت اہم منصوبے شروع کئے ہیں ، جس کے مثبت اثرات مرتب ہوں گے ، ہماری حکومت نے کلین گرین اینی شیٹو کا بھی آغاز کیا ہے۔

مزید پڑھیں : وفاقی دارالحکومت میں پلاسٹک بیگ پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ

یاد رہے 17 مئی کو وزیرِ اعظم عمران خان کی زیر صدارت ماحولیاتی تبدیلیوں سے متعلق اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا تھا، جس میں رواں برس 14 اگست سے پلاسٹک بیگ کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ بھی کرلیا گیا تھا۔

حکام نے بتایا تھا اسلام آباد میں پلاسٹک بیگ کے استعمال کے خاتمے کے لیے بھی قواعد و ضوابط بنا لیے ہیں۔

خیال رہے کہ ملک کے مختلف شہروں اور ضلعوں میں بھی پلاسٹک کے استعمال اور خرید و فروخت پر پابندی عائد کی جاچکی ہے۔

گزشتہ ماہ گلگت بلتستان کی وادی ہنزہ میں بھی پلاسٹک کے استعمال پر مکمل طور پر پابندی عائد کردی گئی، جس کے بعد ہنزہ پلاسٹک کو ممنوع قرار دینے والا ایشیا کا پہلا ضلع بن گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں