The news is by your side.

Advertisement

گجرپورہ زیادتی کیس، گرفتار ملزم شفقت کے سنسنی خیز انکشافات

لاہور: گجرپورہ زیادتی کیس میں گرفتار ملزم شفقت نے پولیس کو دئیے گئے بیان میں سنسنی خیز انکشافات کیے ہیں۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق گجرپورہ زیادتی کیس میں مزید انکشافات سامنے آئے ہیں، گرفتار ملزم نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ واردات کرنے کے لیے عابد نے شفقت اور بالا مستری کو لاہور بلایا، واردات کے لیے تینوں نکلے لیکن بالا مستری واپس چلا گیا، شفقت اور عابد علی نے ڈکیتی کی اور خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔

گرفتار ملزم نے بتایا کہ واردات کے وقت ہم نشے میں تھے، متاثرہ خاتون سڑک سے نیچے نہیں جارہی تھی، ہم پہلے بچوں کو نیچے لے کر گئے تو پھر خاتون سڑک سے نیچے آگئی، خاتون کو سڑک سے نیچے آنے کے بعد ہم نے زیادتی کا نشانہ بنایا، گاڑی کا شیشہ توڑنے سے عابد کا ہاتھ بھی زخمی ہوا تھا۔

ملزم نے اعتراف کیا کہ جائے وقوعہ پر پہلے بھی ڈکیتی کی وارداتیں کرتے رہے ہیں، پتھر یا لکڑی پھینک کر گاڑیوں کو روکتے تھے، جائے وقوعہ کے قریب ڈکیتی کی نیت سے موجود تھے۔

مزید پڑھیں: گجرپورہ کیس : گرفتار شفقت کا خاتون سے زیادتی کا اعتراف، ڈی این اے میچ کر گیا

ملزم شفقت نے بتایا کہ عابد سے مل کر شیخوپورہ میں بھی ڈکیتی میں زیادتی کی کوشش کی لیکن پولیس کے موقع پر پہنچنے سے زیادتی نہ کرسکے اور فرار ہوگئے۔

گرفتار ملزم شفقت نے پولیس کو دئیے گئے بیان میں کہا کہ لنک روڈ واقعے کے بعد ایک رات قلعہ ستار شاہ میں قیام کیا، دوسرے روز میں دیپالپور اور عابد مانگامنڈی اپنے والد کے پاس چلا گیا تھا، عابد سے آخری رابطہ تین دن پہلے ہوا تھا۔

خیال رہے کہ چند روز قبل گجرپورہ موٹروے پر خاتون کو بچوں کے ہمراہ زیادتی کا نشانہ بنایا گیا تھا، زیادتی کیس میں متعدد گرفتاریاں عمل میں آئی ہیں جبکہ مرکزی ملزم عابد علی تاحال فرار ہے جس کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں