The news is by your side.

Advertisement

میکسیکو کے ایک فنکارنے اسلحہ پگھلا کر بیلچے بنادئیے

میکسیکو کے ایک ماہر فنکار پیڈرو ریز نے دنیا کو اسلحے کے استعمال کا ایک نیا طریقہ سکھایا ہے جس سے اموات نہیں ہوں گی۔

میکسیکو ایک ایسا ملک ہے جو کہ اسلحے کے آزادانہ استعمال کے لئے بے پناہ بدنام ہے اور ہر سال کئی افراد مارے جاتے ہیں۔ میکسیکو کے ایک آرٹسٹ پیڈرو نے اس صورتحال کے خاتنمے کے لئے ایک منفرد قدم اٹھاتے ہوئے 1،527 بندوقوں کو پگھلا کر ان سے کاشت میں استعمال ہونے والے بیلچے تیار کئے ہیں۔

پیڈرو موجودہ ثقافت کی ناکامی کی وجوہات جاننے کے لئے لئے توجہ مرکوز کئے ہوئے ہیں اور اس کے لئے وہ کسی قسم کے اقدامات کرتے رہتے ہیں۔ وہ ناکارہ سمجھی جانے والی اشیا میں سے قابل استعمال اشیا کو تلاش کرنے اور ان سے کارآمد اشیاء بنانے کے ماہر ہیں۔

اپنی اسی صلاحیت کی بنا پر انہوں نے سوچا کہ اسلحے سےبھی کچھ مختلف اور مثبت تیار کیا جاسکتا ہے لہذا انہوں نے ایک مہم شروع کی جس میں انہوں نے لوگوں سے ناکارہ اسلحہ جمع کیا اور بدلے میں الیکٹرانک اشیا کی خریداری کے کوپن دئیے۔


انہوں نے اپنی اس مہم کا نام ’پالاس پرو پستولاس‘ رکھا اور اس کے تحت 1،527 پستول جمع کئے جن کو پگھلا کر اتنے ہی بیلچے تیار کئے گئے۔ ان بیلچوں کو اسکولوں اور دیگر تعلیمی اداروں میں تقسیم کیا گیا جس کی مدد سے کم از کم 1،527 درخت اگائے جائیں گے۔

پیڈرو نے ایک مقامی جریدے کو دئیے انٹرویومیں کہا کہ ’’میری اس مہم کا مقصد یہ ثابت کرنا تھا کہ کس طرح ایک ایسی شے جو کہ موت کاذریعہ ہے اسے زندگی میں تبدیل کیا جائے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں