کم عمریوں کی شادی کے خلاف متحرک حدیقہ بشیر عالمی اعزاز کے لیے نامزد -
The news is by your side.

Advertisement

کم عمریوں کی شادی کے خلاف متحرک حدیقہ بشیر عالمی اعزاز کے لیے نامزد

نیویارک : کم عمری کی شادی کیخلاف آواز اٹھانے والی 15 سالہ پاکستانی لڑکی حدیقہ بشیر کو کامن ویلتھ یوتھ ایوارڈ کے لئے نامزد کرلیا گیا ہے۔

حدیقہ بشیر نے قبائلی علاقوں میں کم عمری میں شادی کے خلاف مہم چلائی، کامن ویلتھ سیکرٹریٹ کے مطابق حدیقہ بشیر 13 ممالک سے نامزد 17 لڑکیوں میں شامل ہے، ایوارڈز کی تقریب دو ہفتے بعد ہوگی، جس میں حدیقہ بشیر شرکت کریں گی۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال سوات سے تعلق رکھنے والی اور لڑکیوں کی کم عمری کی شادی کے خلاف مہم کی سربراہ حدیقہ بشیر کو ایشیائی لڑکیوں کے حقوق کی سفیر کا ایوارڈ دیا گیا تھا اور وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والی پہلی پاکستانی لڑکی ہیں۔

hadqa1

اس سے قبل حدیقہ بشیر کو پاکستان میں بچیوں کی کم عمری میں اور زبردستی کی جانے والی شادیوں کے خلاف جدوجہد کرنے پر امریکہ میں ‘محمد علی ہیومنیٹیرین ایوارڈ’ سے نوازا گیا تھا۔

haqiqa

حدیقہ بشیر کا تعلق خیبر پختونخوا کے ضلع سوات سے ہے جو کم عمری کی شادی جیسے ضرر رساں روایت کے خاتمے اور لڑکیوں کو ان کی صلاحیتوں سے بھر پور مستفید ہونے کا موقع دینے کے لیے جدو جہد کررہی ہیں۔

خیال رہے کہ کامن ویلتھ یوتھ ایوارڈز ایشیا، بحرالکاہل، بلقان، امریکہ، افریقہ اور یورپ کے سے 29سال عمر کے لڑکے لڑکیوں کو غربت کے خاتمے اور امن کے قیام سے لے کر ترقی کے مختلف شعبوں میںان کی شاندار خدمات کے اعتراف میں دیاجاتاہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں