The news is by your side.

Advertisement

حج کا خطبہ دینے کا اعزاز کس کے حصے میں آیا؟ نام کا اعلان ہوگیا

ریاض: سعودی عرب کے فرمانروا اور خادم الحرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے رواں سال خطبہ حج کے لیے علامہ عبداللہ بن سلیمان کے نام کی منظوری دے دی۔

عرب میڈیا رپورٹ کے مطابق مسجد الحرام اور مسجد نبوی امور کی صدارتی کمیٹی نے خطبہ حج کے لیے چند علمائے کرام کے نام خادم الحرمین شریفین کو ارسال کیے تھے۔

صدارتی کمیٹی کی جانب سے جاری بیان کے مطابق شاہ سلمان نے رواں سال میدان عرفات سے حج کا خطبہ دینے کے لیے شیخ عبداللہ المنیع کے نام کی منظوری دی۔

مزید پڑھیں: مناسک حج کی ادائیگی آج سے شروع ہورہی ہے

یاد رہے کہ دنیا بھر کے مسلمان حج کا خطبہ مذہبی عقیدت اور احترام سے سنتے ہیں، سعودی حکومت نے رواں سال خطبہ حج کو اردو سمیت دس زبانوں میں پیش کرنے کا اعلان کیا ہے۔

شیخ عبداللہ المنیع کون ہیں؟

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق  شیخ عبداللہ المنیع سعودی عرب کے ممتاز علما بورڈ کے رکن اور ایوان شاہی کے مشیر ہیں۔  انہوں نے ابتدائی تعلیم شقرا کے پرائمری اسکول سے حاصل کی جس کے بعد  تجارت سے منسلک ہوئے۔

یہ بھی پڑھیں: خطبۂ حج، اردو سمیت 10 زبانوں میں نشر کیا جائے گا، سعودی حکومت کا اعلان

بعد ازاں شیخ عبداللہ نے   شقرا کے پرائمری سکول میں تدریس کے فرائض بھی انجام دیے۔ 1377ھ میں امام محمد بن سعود اسلامی یونیورسٹی سے گریجویشن کیا، وہ متعدد کتابوں کے مصنف ہیں۔ عبداللہ بن سلیمان المنیع الوشم کے شقرا علاقے میں 1349ھ کو مطابق 6 دسمبر 1930 کو پیدا ہوئے تھے۔ ان کی عمر 89 برس ہے۔

خیال رہے سعودی عرب نے کورونا کی وبا کے پیش نظر محدود پیمانے پر حج کا اعلان کیا ہے۔ رواں سال صرف دس ہزار افراد کو فریضہ مقدسہ کی ادائیگی کی سعادت حاصل ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں: حج 2020: صحافیوں کی سہولت کے لیے خصوصی انتظامات

اسے بھی پڑھیں: حجاج کے درمیان سماجی فاصلہ یقینی بنانے کے لیے خصوصی اقدامات

عازمین کا انتخاب خودکار طریقے سے کیا گیا، جن میں 30 فیصد مقامی اور 70 فیصد غیر ملکی تارکین ہیں، منتخب عازمین کے پہلے گروپ کو ہفتے کے روز مکہ مکرمہ پہنچا دیا گیا ہے، جہاں وہ ایامِ حج کے آغاز سے قبل ایک ہوٹل میں علیحدہ علیحدہ کمروں میں مقیم ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں