حویلیاں طیارہ حادثہ کیس، اپریل کے پہلے ہفتے میں انکوائری رپورٹ جمع کرانے کا حکم
The news is by your side.

Advertisement

حویلیاں طیارہ حادثہ کیس، اسلام آباد ہائی کورٹ کا اپریل کے پہلے ہفتے میں انکوائری رپورٹ جمع کرانے کا حکم

اسلام آباد :  حویلیاں طیارہ حادثہ کیس میں انکوائری مکمل نہ ہونے کا انکشاف ہوا، جس پر عدالت نے سول ایوی ایشن اتھارٹی کی مزید 8 ماہ میں انکوائری مکمل کرنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے  اپریل کے پہلے ہفتے میں انکوائری رپورٹ جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں حویلیاں طیارہ حادثہ کیس سے متعلق سماعت ہوئی ، سماعت میں حادثے کو 26ماہ گزرنے کے بعد بھی انکوائری مکمل نہ ہونے کا انکشاف ہوا، جس کے بعد انکوائری مکمل کرنے کے لیے مزید 8 ماہ کاوقت مانگ لیاگیا۔

عدالت نے سول ایوی ایشن اتھارٹی کی مزید 8 ماہ میں انکوائری مکمل کرنے کی استدعا مسترد کرتے ہوئے اپریل کے پہلے ہفتے میں انکوائری رپورٹ جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

سول ایوی ایشن اتھارٹی حکام نے بتایا جہاز کے کچھ پرزے فرانس اور کچھ امریکی ساختہ تھے، غیر ملکی پرزے ہونے کے باعث انکوائری کو وقت لگ رہا ہے، انکوائری تاحال جاری ہے، مزید وقت درکار ہوگا۔

بعد ازاں اسلام آباد ہائی کورٹ نے کیس کی سماعت اپریل کے پہلے ہفتے تک ملتوی کردی۔

خیال رہے پائلٹ کی والدہ نے جوڈیشل کمیشن کےقیام کیلئے درخواست دے رکھی ہے۔

مزید پڑھیں : حویلیاں طیارے حادثے کی وجوہات سامنے آگئیں

یاد رہے گذشتہ ماہ سیفٹی انویسٹی گیشن بورڈ نے حویلیاں طیارے حادثے کے دو سال بعد ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ جاری کی تھی ، جس میں سیفٹی انویسٹی گیشن بورڈ نے طیارے میں اہم تکنیکی خرابیوں کی نشاندہی کی۔

رپورٹ میں پی آئی اے کی انجینئرنگ کی غفلت ولاپرواہی ظاہرکی گئی جبکہ ایس آئی بی نے سول ایوی ایشن اتھارٹی کو ضروری اقدامات کرنے کی بھی ہدایت کی تھی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ انجن ساز کمپنی کی جانب سے ایس آئی بی کو حتمی رپورٹ پیش کردی ہے، ایس آئی بی اپنی مکمل رپورٹ تیار کرکے وزیر اعظم کو پیش کرے گا۔

واضح رہے 7 دسمبر 2016 میں چترال سے اسلام آباد آنے والے طیارے کو حویلیاں کے قریب حادثہ پیش آیا تھا، جس کے نتیجے میں معروف مبلغ جنید جمشید سمیت 47 مسافر شہید ہوگئے تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں