The news is by your side.

پسند کی شادی : عدالت میں میدان جنگ کا منظر، رشتہ دار گتھم گتھا

لاہور : لاہورہائی کورٹ میں پسند کی شادی کے کیس  میں عدالت  میدان جنگ بن گئی ، لڑکے کے رشتہ دار بپھر گئے اور لڑکے کو سسرالیوں کے ہمراہ جانے سے روکنے کے لئے ہاتھا پائی کرتے رہے۔

تفصیلات کے مطابق لاہورہائی کورٹ میں پسند کی شادی کے کیس کی سماعت ہوئی، جس میں لڑکی کے اہل خانہ نے بیٹی اور داماد کو گھر لے جانے کی استدعا کی۔

کمرہ عدالت میں لڑکا ساس کے ہمراہ جانے سےانکار کرتا رہا، جس پر عدالت نے کہا شادی کی ہے تو بیوی کے ساتھ ساس کے ہمراہ سسرالیوں کے پاس جانے میں کیا رکاوٹ ہے۔

لڑکے نے مؤقف میں کہا مجھے اپنے سسرالیوں سےجان کا خطرہ ہے، جس پر ساس کا کہنا تھا کہ میراخاوند فوت ہوچکابیٹی نےاپنی مرضی سےشادی کی داماد کوقبول کرتی ہوں۔

ساس نے عدالت کو یقین دہانی کرائی کہ میری وجہ سےداماد کو کوئی تکلیف نہیں ہوگی، ساس کے بیان کے بعد لڑکے نے بیوی کے ہمراہ ساس کے ساتھ جانے پر آمادگی کا اظہار کیا۔

کمرہ عدالت سے باہر لڑکے کے رشتہ دار بپھر گئے اور لڑکے کو سسرالیوں کے ہمراہ جانے سے روکنے کےلئے ہاتھا پائی کرتے رہے۔

عدالتی سیکیورٹی پرمامور پولیس اہلکاروں نے لڑکے کے رشتے داروں کو تنبہیہ کرتے ہوئے لڑکے کو عدالتی حکم کے مطابق ساس کے ہمراہ جانے کی ہدایت کی۔

ہاتھا پائی سے لڑکی نڈھال ہوکرزمین پربیٹھ گئی ، لڑکی نے بیان دیا کہ کسی نے اغوانہیں کیا منتظر نامی لڑکے سے پسند کی شادی کی۔

خیال رہے لڑکی کی والدہ نےبیٹی کی بازیابی کے لئے عدالت سے رجوع کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں