برطانیہ میں برفباری، نظام زندگی مفلوج british
The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ میں شدید برفباری، نظام زندگی منجمد

لندن : برطانیہ میں برفباری نے سردی کی شددت میں اضافہ کردیا جس کے ملک کے مختلف حصّوں میں نظام زندگی منجمد ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق مغربی ملک برطانیہ کی ریاستیں اسکاٹ لینڈ اور شمالی انگلینڈ میں موسم سرما کا آغاز ہوتے ہی مختلف علاقوں میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوگیا، جس نے عوام کی مشکلات میں بھی اضافہ کردیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ برطانیہ میں موسم کے آغاز پر برفباری شروع ہوئی نظام زندگی مفلوج ہوگیا اور اسکاٹ لینڈ میں درجہ حرارت منفی چار تک گر گیا۔

برطانوی میڈیا کا کہنا ہے کہ سردی میں شدت کے باعث شمالی انگلینڈ میں بھی درجہ حرارت منفی ایک تک گرگیا۔

مقامی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ برطانیہ میں موسم سرما کے آغاز پر گھڑیاں بھی آج سے ایک گھنٹہ پیچھے کردی جائیں گی جنہیں مارچ 2019 کے آخری اتوار کو موسم گرما کے آغاز پر واپس ایک گھنٹہ آگے کردیا جائے گا۔


مزید پڑھیں : برطانیہ میں آئندہ ہفتے شدید برفباری کی پیش گوئی


یاد رہے کہ برطانوی محکمہ موسمیات چند روز قبل واضح کر دیا تھا کہ آئندہ ہفتے پورے ملک میں شدید برفباری ہوگی جس کے باعث ٹھنڈ کی شدت میں مزید اضافہ ہوگا۔


مزید پڑھیں : برفباری برطانیہ کی جانب گامزن، درجہ حرارت منفی 3.4 ریکارڈ


گذشتہ ہفتے برطانیہ میں سینی برج اور ساؤتھ ویلز میں درجہ حرارت 1.8 سینٹی گریڈ سفولک کے علاقے سائنٹن ڈاؤن ہیم میں درجہ حرارت 1.8 سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ رواں سال مارچ میں برطانیہ میں شدید برفباری کے بعد نظام زندگی درہم برہم ہوگئی تھی۔

محکمہ موسمیات کو جنوب مغربی حصّے میں دو روز تک 30سنیٹی میٹر برفباری ہونے کے پیش نظر وارننگ جاری کرنی پڑگئی تھی۔

واضح رہے کہ برطانوی میٹ آفس نے مارچ کے اوائل میں ’ایما‘ نامی طوفان کے پیش نظر عوام کی حفاظت کے لیے ریڈ وارننگ جاری کی تھی۔ اس کے باوجود سڑکوں پر متعدد حادثات دیکھنے میں آئے تھے اور لندن کے ایک پارک میں ایک ساٹھ سالہ شخص برف میں پھنس کر جاں بحق بھی ہوگیا تھا۔ ہیتھرو اور سٹی ائرپورٹ سمیت برطانیہ بھر کے ائرپورٹس پر پروازیں بھی متاثر ہوئیں تھیں اور گلاسگو ائرپورٹ پر آپریشن بند ہونے کے بعد ریڈ کراس کی طرف سے مسافروں کو بستر مہیا کئے گئے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں