خواتین کے لیے گھر خطرناک قرار، دنیا بھر میں یومیہ 137 خواتین قتل ہونے لگیں -
The news is by your side.

Advertisement

خواتین کے لیے گھر خطرناک قرار، دنیا بھر میں یومیہ 137 خواتین قتل ہونے لگیں

خواتین کے مقابلے میں چار گنا زیادہ مردوں کو بھی قتل کیا جاتا ہے

نیویارک: اقوام متحدہ کی جانب سے جاری ہونے والی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ دنیا بھر میں یومیہ 137 خواتین کو قتل کردیا جاتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کے ادارہ برائے منشیات و جرم (UNODC) کی جانب سے خواتین پر تشدد کے حوالے سے ایک رپورٹ جاری کی گئی۔

رپورٹ میں جاری اعداد و شمار کے مطابق دنیا بھر میں شوہر یا اہل خانہ کے تشدد و ظلم سے اوسطاً 137 خواتین روزانہ قتل کردی جاتی ہیں۔اقوام متحدہ کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ عورتو ں کو اُن کے گھروں میں ہی قتل کیا جاتا ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سال 2017 میں قتل ہونے والی 87 ہزار خواتین میں سے آدھی سے زائد تعداد کو اُن کےشوہروں یا عزیزوں نے موت کے گھاٹ اتارا، 30 ہزار خواتین کو اُن کے خاوند جبکہ 20 ہزار کو رشتے داروں نے کسی بھی بات پر قتل کیا۔

مزید پڑھیں: پاکستان کی پہلی دلت سینیٹر دنیا کی 100 بااثر خواتین میں شامل

اقوام متحدہ کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ’خواتین کے مقابلے میں چار گنا زیادہ مردوں کو بھی قتل کیا جاتا ہے، دنیا بھر میں روزانہ ہونے والی ہر دس ہلاکتوں میں سے 8 واقعات مردوں کو قتل کرنے کے ہوتے ہیں‘۔

رپورٹ کے مطابق مختلف ممالک کے سرکاری ذرائع سے موصول ہونے والے اعداد و شمار میں یہ بات بھی سامنے آئی کہ ’خواتین اور لڑکیوں کے قتل کی اہم وجہ صنفی امتیاز جبکہ دوسری بڑی وجہ شوہر کی اقربا پروری ہے‘۔

تیس (30) ہزار خواتین کو اُن کے خاوند جبکہ 20 ہزار کو رشتے داروں نے کسی بھی بات پر قتل کیا

ادارہ برائے منشیات و جرم کے سربراہ کا کہنا ہے کہ ’رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی کہ خواتین کے لیے سب سے خطرناک جگہ اُن کا گھر ہے کیونکہ وہاں شوہر یا فیملی ممبران انہیں آسانی سے قتل کرسکتے ہیں‘۔

یہ بھی پڑھیں: خیبر پختونخواہ میں گھریلو تشدد کی روک تھام کے لیے قانون تیار

اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ خواتین کو قتل کرنے کے واقعات افریقا میں پیش آئے، امریکا اس حوالے سے دوسرے جبکہ ایشیاء چوتھے نمبر پر رہا۔ یورپین ممالک میں گزشتہ برس سب سے کم خواتین کو قتل کیا گیا ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں