سمندری طوفان ’مائیکل‘ کی فلوریڈا میں تباہ کاریاں، 2 افراد ہلاک درجنوں زخمی hurricane-michael
The news is by your side.

Advertisement

سمندری طوفان ’مائیکل‘ کی فلوریڈا میں تباہ کاریاں، 6 افراد ہلاک درجنوں زخمی

واشنگٹن : امریکی تاریخ کا بدترین سمندری طوفان ’مائیکل‘ نے فلوریڈا کے ساحلی شہر میامی میں تباہی مچا دی، لاکھوں افراد بجلی سے محروم جبکہ درخت گرنے سے 6 افراد ہلاک درجنوں زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق خطرناک سمندری طوفان مائیکل امریکی ریاست فلوریڈا کے ساحلی شہر میامی سے ٹکرا گیا، مائیکل کے نتیجے میں شہر کے نشیبی علاقے زیر آب آگئے جبکہ طوفان کے باعث لاکھوں کی تعداد میں افراد متاثر ہوئے ہیں۔

امریکی ریاست فلوریڈا کے گورنر ریک اسکوٹ کا کہنا ہے کہ ’مائیکل‘ نامی سمندری طوفان نے ریاست میں ’وہ تباہی مچائی ہے جس کا تصور کرنا ممکن نہیں‘۔

فلوریڈا کے گورنر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’مائیکل‘ نے ’بہت ساری زندگیوں کو ہمیشہ کےلیے تبدیل کردیا اور بہت کے خاندانوں نے اپنا سب کچھ گنواں دیا‘۔

ریک اسکوٹ نے بتایا کہ امریکی کوسٹ گارڈ نے امدادی سرگرمیاں انجام دیتے ہوئے دس منصوبوں پر ذمہ داریاں انجام دے رہے ہیں، جنہوں نے طوفان میں پھنسے 27 افراد کی زندگیاں بچائی ہیں۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ سمندری طوفان ’مائیکل‘ اپنے راستے میں آنے والی ہر چیز کو تباہ و برباد کردیا، مائیکل کے باعث کروڑوں امریکی ڈالرز کا نقصان ہوا ہے۔

فلوریڈا، الاباما، جورجیا اور شمالی کیرولینا میں ہنگامی حالات نافذ ہیں جبکہ سکول اور سرکاری دفاتر بند ہیں۔

امریکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ کیٹیگری 4 کے سمندر ی طوفان ’مائیکل‘ نے شہر میں ہر طرف تباہی مچادی، ہورکین کے باعث چلنے والی تیز ہواؤں سے درجنوں درخت اور کھمبے گرگئے جبکہ چھ  افراد درخت گرنے سے ہلاک متعدد زخمی ہوگئے۔

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ریسکیو ٹیموں نے زخمیوں اور متاثرین کو امداد فراہم کرنے کا کام شروع کردیا ہے۔

 

مقامی میڈیا کے مطابق ہورکین کے نتیجے میں 250 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی ہواؤں نے گھروں کی چھتیں بھی اڑا دیں جبکہ شہر میں 2 لاکھ سے زائد گھر اور کاروباری مراکز کی بجلی معطل ہوگئی جبکہ شہر کا مواصلاتی نظام بھی تباہ ہوگیا۔

امریکی خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ ہورکین نے امریکی ریاستوں فلوریڈا میں 2 لاکھ افراد کو متاثر کیا ہے، اعلیٰ حکام کی جانب سے فلوریڈا سمیت الاباما اور جارجیا ریاستوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ہے۔

امریکی محکمہ موسمیات کا کہنا ہے ہورکین ’مائیکل‘ انتہائی طاقت ور ہے جس کے باعث سمندر میں 14 فٹ لہریں بلند ہوسکتی ہیں۔ جو دیگر شہروں کی جانب بڑھ رہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ ریاستی حکومتوں نے 3 لاکھ 70 ہزار شہریوں کو محفوظ مقامات پر منتقل ہونے کی ہدایت جاری کردی ہے۔

واضح رہے کہ ہورکین ’مائیکل‘ امریکی تاریخ کا بدترین طوفان ہے جو اب تک وسطی امریکا میں 13، ہنڈورس میں 6، نیکاراگوا میں 4 اور ایل سلواڈور میں تین افراد کی جان لے چکا ہے۔

مائیکل امریکہ میں اب تک آنے والا تیسرا شدید ترین سمندری طوفان ہے۔ اس سے قبل سنہ 1969 میں کیمل نامی طوفان ریاست میسی سپی میں اور لیبر ڈے طوفان سنہ 1935 میں فلوریڈا میں ہی آیا تھا۔

ہوریکین کی درجہ بندی

اب ہم آتے ہیں ہورکین کی درجہ بندی کی طرف جس سے آپ کو علم ہوگا کہ کون سا درجہ کتنا شدید ہے۔

درجہ 1: کیٹگری 1 کے ہورکین میں ہوا کی رفتار 119 سے 153 کلومیٹر فی گھنٹہ ہوتی ہے۔ یاد رہے کہ جب ہوا کی رفتار 119 کلومیٹر فی گھنٹہ سے تجاوز کر جائے تو یہ طوفان کہیں ٹائی فون اور

کہیں ہورکین کا سبب بنتا ہے۔

یہ کچھ حد تک نقصان پہنچاتا ہے جبکہ بجلی کی فراہمی میں تعطل کا سبب بنتا ہے۔

درجہ 2: اس درجے میں ہوا کی رفتار 154 سے 177 کلو میٹر فی گھنٹہ ہوتی ہے اور یہ شدید نقصان کا سبب بنتا ہے۔


مزید پڑھیں : مشرق سے مغرب تک تباہ کن سیلاب اور طوفان، یا الٰہی یہ ماجرا کیا ہے؟


درجہ 3: ہوا کی رفتار 178 سے 208 کلو میٹر فی گھنٹہ ہوتی ہے جو پختہ تعمیر کیے گئے مکانات کو بھی نقصان پہنچاتی ہے۔

درجہ 4: ہوا کی رفتار 209 سے 251 کلومیٹر فی گھنٹہ جو زمین میں مضبوطی سے گڑے درختوں کو جڑ سے اکھاڑ پھینکتی ہے۔

درجہ 5: ہوا کی رفتار 252 کلو میٹر فی گھنٹہ یا اس سے زائد، یہ طوفان کی شدید ترین قسم ہے جو عمارتوں کو تباہ کردیتی ہے اور اس کے آخر میں تباہی و بربادی کے سوا کچھ نہیں بچتا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں