The news is by your side.

Advertisement

حیدر آباد جلسہ، پی ڈی ایم رہنماؤں کی گھن گرج

حیدرآباد: پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کے رہنماؤں نے آج حیدر آباد کے جلسے میں ایک بار پھر حکومت کو اپنی تنقیدی توپوں کا نشانہ بنایا، اور خوب گھن گرج دکھائی۔

پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے اپنے خطاب میں کہا کہ حکومت کے گھر جانے تک تحریک چلتی رہے گی، میرا کارکن اس وقت تک تیرتا رہے گا جب تک سمندر میں موجیں ہیں، اچھی لگتی ہے جب اسٹیبلشمنٹ کہتی ہے سیاست سے تعلق نہیں، ہم بھی چاہتے ہیں سیاست میں اسٹیبلشمنٹ کا عمل دخل نہ ہو۔

مولانا نے کہا آج ہم جس محاذ پر ہیں اس میں اپنی رکاوٹیں جانتے ہیں، جمہوریت کے راستے میں رکاوٹیں ہیں انھیں ہٹانا ہوگا، میں نے 40 سال سیاست کی، سیاست کی الف ب ہمیں نہ سکھائیں، سیاست کے اصول جاننے ہیں تو ہماری شاگردی کرنا ہوگی، ہم اس حکومت کو بھی اور نیب کو بھی بے بس کر دیں گے۔

انھوں نے کہا قوم کو امانت واپس نہیں کریں گے تو ہم بھی آرام سے نہیں بیٹھیں گے، عمران خان آپ ابھی ہمارے احتساب کے شکنجے میں ہیں، موجودہ حکومت نے پاکستان کو معاشی لحاظ سے کنگال کر دیا ہے، آج ملک میں سرکاری ملازمین کو تنخواہیں دینے کے پیسے نہیں، کس بنیاد پر ایک کروڑ نوکریاں دینے کی بات کی تھی۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے اپنے خطاب میں کہا ان شاء اﷲ مارچ میں مارچ ضرور ہوگا، ہم سب اسلام آباد میں ملیں گے اور اس نا اہل حکومت کو گھر بھیجیں گے۔

انھوں نے کہا کب تک اس حکومت کو بھگتیں گے، جب انھیں ہار نظر آتی ہے تو اسٹیبلشمنٹ کو سیاست میں گھسیٹ لیا جاتا ہے، سینیٹ الیکشن آ رہے ہیں یہ پھر لانے والوں کی طرف دیکھ رہے ہیں، پیپلز پارٹی کا بیانیہ ہے کہ ہر ادارے کو اپنا کام کرنا چاہیے، سیاست کو سیاست دانوں پر چھوڑنا چاہیے، ہم سب مل کر حکومت کو بھگائیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں