The news is by your side.

Advertisement

آئی بی اے کا طالبعلم ہراسمنٹ کا معاملہ سامنے لانے پر داخلے سے محروم

کراچی : آئی بی اے طالبعلم کو طالبہ سے ہراسمنٹ کا معاملہ سامنے لانے پر داخلے سے محروم کردیا گیا ، بورڈ آف گورنرز نے آئی بی اے انتظامیہ پر طالبعلم کا داخلہ بحال کرنے پر زور دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آئی بی اے کے طالبعلم کو زیر تعلیم ایک طالبہ کو ہراساں کرنے کی شکایت کرنے پر داخلے سےمحروم کردیاگیا ، طالبعلم نےطالبہ کو ہراساں کئے جانے کا معاملہ سوشل میڈیاپراٹھایاتھا، جس پر ہراسمنٹ کمیٹی نے طالبعلم کا داخلہ منسوخ کردیا۔

آئی بی اے کے ترجمان کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ ہرطالبعلم کو کسی بھی فیصلے اور شکایت پر اپیل کا حق حاصل ہے،طالبعلم سے متعلق فیصلہ کمیٹی نے کیا تھا جبکہ طالبعلم کی جانب سے ہراسمنٹ کی شکایت پر انتظامیہ نے اس کی حوصلہ افزائی کی ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ طالبعلم کو سوشل میڈیا کا استعمال نہیں کرنا چاہئے تھا،ہراسمنٹ کے حوالے سے جس انتظامی افسر پر الزام ہے، ہراسمنٹ کمیٹی اس کی تحقیقات کر رہی ہے۔

آئی بی اے کے ترجمان نے مزید کہا کہ آئی بی اے کا ایک ضابطہ اخلاق ہے ، جس پر عمل کرنا سب کی ذمہ داری ہے، آئی بی اے اس سے قبل بڑے عہدے پر موجود ایک اعلیٰ افسر کو ماضی میں فارغ کر چکی ہے، طالبعلم کوبات چیت کے متعدد مواقع بھی فراہم کئے گئے، ان کی جانب سے کوئی مناسب جواب نہ ملنے پر کمیٹی نے داخلہ منسوخ کرنے کی کارروائی کی تھی۔

دوسری جانب آئی بی اے کے ایک طالبعلم جبراییل کو ہراسمنٹ کی شکایت کرنے پرداخلے سے محروم کرنے کے حوالے سے بورڈ آف گورنر کا اجلاس ہوا، بورڈ آف گورنر نے طالبعلم کا داخلہ منسوخ کئے جانے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے آئی بی اے کی انتظامیہ پر طالبعلم کا داخلہ بحال کرنے پر زور دیا۔

بورڈ آف گورنر نے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر کو طالبعلم کا داخلہ بحال کرنے اور معاملہ فوری ختم کرنے کا مشورہ دیا ہے جبکہ اجلاس میں ڈونرز نے آئی بی اے سے اپنے مالی تعاون پر نظر ثانی کا عندیہ بھی دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں