The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد: امریکی سی آئی اے چیف کے خلاف ڈرون حملے کی ایف آئی آر بحال

اسلام آباد: وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی ہائیکورٹ نے میر علی ڈرون حملہ کیس میں امریکی سینٹرل انٹیلی جنس ایجنسی سی آئی اے کے چیف کے خلاف ایف آئی آر بحال کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں میر علی ڈرون حملہ عملدر آمد کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے پاکستان میں سی آئی اے کے سابق اسٹیشن چیف جوناتھن بینکس اور ان کے مشیر جون ریزرو کے خلاف ایف آئی آر بحال کرنے کا حکم دے دیا۔

عدالت نے استفسار کیا کہ عدالت نے کب حکم دیا کہ ایف آئی آر درج کر کے خارج کردیں۔ جواب میں ایس ایچ او تھانہ سیکریٹریٹ اسلام آباد نے عدالت سے معافی طلب کرلی۔

جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے ریمارکس دیے کہ پاکستان کی انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) اور انٹیلی جنس بیورو (آئی بی) کے خلاف پروپیگنڈا کیا جاتا ہے لیکن سی آئی اے کے خلاف ہمت نہیں، امریکیوں کی غلامی بہت ہوگئی۔

انہوں نے کہا کہ کیا پاکستانی انسان نہیں ہیں۔ ایمل کانسی کو بھیجا جا سکتا ہے تو مطلوب شخص کیسے نہیں لایا جا سکتا۔

یاد رہے کہ دسمبر 2009 میں شمالی وزیرستان کے علاقے میر علی پر ڈرون حملے میں درخواست گزار کریم خان کا بیٹا اور بھائی لقمہ اجل بنے تھے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں