اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدرنیشنل بینک کی برطرفی کودرست قراردے دیا -
The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدرنیشنل بینک کی برطرفی کودرست قراردے دیا

اسلام آباد : اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدر نیشنل بینک سعید احمد کی برطرفی کو درست قرار دے دیا، عدالت نے کہا کہ منی لانڈرنگ کے الزام پر خود استعفیٰ دینا چاہیے تھا۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ میں جسٹس اطہرمن اللہ کی سربراہی میں سابق صدر نیشنل بینک سعید احمد کی درخواست پرسماعت ہوئی۔

عدالت نے سماعت کے دوران ریمارکس دیے کہ قانون کے مطابق سعید احمد کے خلاف ریفرنسز فائل ہیں، ان کے خلاف الزامات بھی دیکھے گئے ہیں۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے ریمارکس دیے کہ سعید احمد پراسحاق ڈارکے لیے منی لانڈرنگ کرنے کا الزام تھا توخود استعفیٰ دینا چاہیے تھا۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ سعیداحمد کا منی لانڈرنگ کا ریفرنس زیرسماعت ہے توہائی کورٹ کیا کرے، سعیداحمد کے حق میں فیصلہ دیں توانصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوں گے۔

بعدازاں اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق صدرنیشنل بینک سعید احمد کی برطرفی کودرست قرار دے دیا۔

وفاقی کابینہ کا صدر نیشنل بینک کو ہٹانے کا فیصلہ

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ وفاقی کابینہ کی جانب سے عہدے سے برطرف کیے جانے والے سابق صدر نیشنل بینک سعید احمد نے برطرفی اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کی تھی۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ نہ قانون وضوابط کی کبھی خلاف ورزی کی اور نہ ہی کوئی ڈیپارٹمنٹل انکوائری میرے خلاف زیرالتواہے جبکہ نہ کوئی چارج فریم ہوا، بغیر سنے برطرفی غیرقانونی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں