site
stats
عالمی خبریں

بھارت ماتا کی جے نہ بولنے پر مسجد کے امام پر تشدد

نئی دہلی : بھارتی ریاست ہریانہ میں انتہاپسند جماعت بجرنگ دل کی غنڈہ گردی عروج پر ہے، بھارت ماتا کی جے نہ بولنے پرمسجد کے امام پر تشدد کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں انتہا پسندوں کی غنڈہ گردی جاری ہے اور مسلمانوں کا جینا مشکل ہوتا جا رہا ہے، ہریانہ میں مسجد کے امام کو بھارت ماتا کی جے کا نعرہ نہ لگانے پر تشدد کا نشانہ بنایا۔

بجرنگ دل کے غنڈے زبردستی مسجد میں داخل ہوئے اور امام کو باہر نکالا اور زبردستی انہیں بھارت ماتا کی جے بولنے کے لئے کہنے لگے، امام نے بات نہ مانی تو انتہا پسندوں نے تشدد کرنا شروع کردیا۔

انتہاپسندوں نے ہریانہ سے تمام مسلمانوں کو نکالنے کے نعرے بھی لگائے۔

مسجد کی جانب سے بجرنگ دل کے کارکنوں کے خلاف پولیس میں شکایت درج کرائی گئی ہے، پولیس نے انتہاپسند جماعت بجرنگ دل کے کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج کر کے تحقیقات شروع کردی ہیں تاہم کسی کی بھی گرفتاری عمل میں نہیں آسکی ہے ۔

یاد رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں امرناتھ یاتریوں پر دہشت گردوں کے حملے کے نتیجے میں چھ خواتین سمیت سات ہندو یاتری ہلاک اور 19 زخمی ہوگئے تھے۔

اس حملے کے بعد سوشل میڈیا پر بھارتی شہریوں نے حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ دہشت گردوں کے اڈوں کا خاتمہ کیا جائے تاہم اس حملے کے بعد کشمیر میں انٹرنیٹ کی سہولت کو معطل کر دیا گیا تھا۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top