The news is by your side.

Advertisement

کرپشن کے خلاف جنگ میں قوم کو ساتھ دینا ہوگا، وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ماضی میں ایک دوسرے پر کیسز بنانے والے آج ایک پلیٹ فارم پر کھڑے ہوگئے ہیں، یہ لوگ کہہ رہے ہیں کسی نہ کسی طرح عمران خان کو فارغ کرادیں۔

تفصیلات کے مطابق عوام سے براہ راست گفتگو کے دوران وزیراعظم عمران خان نے نام لئے بغیر مسلم لیگ (ن) اور پیپلز پارٹی کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ دوپارٹی سسٹم گذشتہ پینتیس سال سےجڑیں گاڑ کربیٹھا ہوا تھا، ماضی میں ایک دوسرے پر کیسز بنانے والے آج ایک پلیٹ فارم پر کھڑے ہوگئے ہیں، یہ لوگ کہہ رہے ہیں کسی نہ کسی طرح عمران خان کو فارغ کرادیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہم طاقتور کے خلاف جہاد کررہے ہیں، آپ یہ مت سوچیں کہ میں صبح آفس جارہا ہوں بلکہ جہاد کرنےجارہا ہوتا ہوں، پاکستان میں طاقتور پر ہاتھ ڈالنا آسان کام نہیں ہے، یہ اپنے وکیلوں کو5،5کروڑروپےدیتےہیں۔وزیراعظم عمران خان نے حالیہ دو سالوں کو اپنی زندگی کے سب سے زیادہ چیلنجنگ سال قرار دیتے ہوئے کہا کہ کوئی یہ بات نہیں کرتا کہ حکومت نے کیا اچھائیاں کیں؟کوئی یہ بات نہیں کرتا ہم نے ملک کو کس طرح استحکام دیا؟ کوئی بات نہیں کرتا کہ کیسے ہم نے ملک کومعاشی طورپر آگے بڑھایا؟ تبدیلی آرہی ہے، حقیقی تبدیلی کیلئے عوام کو تھوڑا صبر کرنا پڑے گا۔

قبضہ مافیا ملک کے لئے عذاب ہے، وزیراعظم

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ملک میں اسوقت سب سے بڑا عذاب قبضہ مافیا ہے، گذشتہ ایک سال کے دوران ساڑھے چار سو ارب روپے کی سرکاری زمین قبضہ مافیا سے واگزار کرائی ہے، لاہور کے ایک بڑے قبضہ مافیا کو سیاسی جماعت کی سرپرستی حاصل تھی، سیاسی جماعت کی سربراہ قبضہ مافیا کیساتھ تصاویر کھینچوا رہی ہوتی ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ قبضہ مافیا پولیس اور حکومتی سرپرستی کے بغیر چل ہی نہیں سکتا، پہلی بار ایسی حکومت ہے جو قبضہ مافیا کی پشت پر نہیں ہے،ملک میں سب سے بڑا ظلم اوورسیز پاکستانیوں کیساتھ ہوتاہے، اس وقت بھی ملک میں آرگنائز قبضہ مافیا ہیں جو اوورسیز پاکستانیوں کی زمینوں پر قبضہ کرتاہیں، قبضہ مافیا کی سٹیزن پورٹل پر شکایت درج کرائیں فوری کارروائی ہوگی۔

کرپشن کی جنگ میں قوم اور عدلیہ کو ساتھ دینا ہوگا

آپ کا وزیراعظم آپ کے ساتھ میں وزیراعظم عمران خان نے گفتگو کرتے ہوئے ایک بار پھر واضح کیا کہ کرپشن کے خلاف جنگ پوری قوم نے لڑنی ہے، عدلیہ نے لڑنی ہے،اکیلا عمران خان یہ جنگ نہیں جیت سکتا، کیونکہ ہمارےجیسے غریب ممالک سےہر سال ایک ہزار ارب ڈالر چوری ہو کر امیر ملکوں میں جاتاہے،خوشحالی اُدھر آتی ہے،بربادی پاکستان میں ، اطلاعات ہیں کہ اس وقت بھی پاکستان سے باہر سات ہزار ارب ڈالر پڑا ہوا ہے۔

سابق وزیراعظم نوازشریف کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ہم نواز شریف سے شیورٹی بانڈ لینا چاہتےتھے،عدلیہ نےباہربھیج دیا، ہمارے ملک کا المیہ یہ ہے کہ ہمارے ہاں کرپٹ لوگوں پر پھول نچھاورہورہےہیں جیسےانہوں نے کشمیر فتح کرلیاہو، وہ لوگ اکھٹے ہیں جو میری حکومت گرانا چاہتے ہیں، میرا قصوریہ ہےکہ این آر اونہیں دیا۔

کرپشن ایسا کینسر ہے جو صرف پاکستان نہیں ہر غریب ملک میں ہے، کرپشن جیسی چیز امیر ملک کو دیمک کی طرح برباد کردیتی ہے، حکمرانوں کی کرپشن ملک کو تباہ اور مقروض کردیتی ہے، پیسہ چوری کرکے اقتدار میں آکر وزیراعظم اور وزیر بنتے ہیں، ملک سے باہر پیسے بھیجتے ہیں اور لندن میں بڑےبڑےمحلات بناتےہیں،وزیراعظم چوری شروع کرتا ہے تو اصل تباہی ہوتی ہے۔

وزیراعظم نے بتایا کہ پاکستان جیسے غریب ملکوں کا سات ہزار ارب ڈالر ملک سے باہر موجود ہے، ہم جیسے ممالک پورا زور لگارہےہیں کہ ہمارا پیسہ واپس دیاجائے، کرپشن کا پیسہ آتا تو اس سے امیر ملکوں کو فائدہ ہورہاہے۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں