The news is by your side.

فوج کے سب سے بہتر افسر کو آرمی چیف لگانا چاہیے، عمران خان

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ اور سابق وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ فوج کے اندر سب سے بہتر افسر کو آرمی چیف لگانا چاہیے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین اور سابق وزیراعظم عمران خان نے اسلام آباد میں سینئر صحافیوں اور اینکرزسے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرے لیے پنجاب حکومت نہیں الیکشن اہم ہیں، کتنا بڑا ظلم ہے کہ آرمی چیف کی تقرری پر ملک رکا ہوا ہے۔ فوج کے اندر سب سے بہتر افسر کو آرمی چیف لگانا چاہیے۔

عمران خان ںے کہا کہ نوازشریف واپس نہیں آئے گا کیونکہ اس کا پلان خراب ہوگیا ہے۔ عام انتخابات 2022 میں ہی ہوں گے۔ حکومت اس سال انتخابات پر تیار تھی لیکن پنجاب کے ضمنی انتخابات کے بعد حکومت گھبرا گئی ہے۔ مجھے نا اہل نہیں کیا جا سکتا، الیکشن کمیشن کو فیصلہ کہیں اور سے دیا گیا۔ الیکشن کمیشن تبدیل نہ ہوا توصوبائی حکومتیں نہیں چھوڑیں گے۔

سربراہ پی ٹی آئی کا مزید کہنا تھا کہ فنڈریزنگ کی حوصلہ شکنی ہوگی تو لوگ مافیا سے فنڈ لیں گے۔ ماضی میں 2 غیر ملکی حکومتوں نے فنڈنگ کی پیشکش کی تھی جو ٹھکرا دی۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ادارے کی طرف سے ملنے والی تمام یقین دہانیاں غلط نکلیں۔ روسی صدر سے تعلقات کا وزارت خارجہ اور فوج نے کہا تھا۔ 20 مئی کو مجھے گرفتار کرنے کا پلان بنایا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں