پناما لیکس: نواز شریف 7 ماہ بعد بھی تیار نہیں‘ عمران خان -
The news is by your side.

Advertisement

پناما لیکس: نواز شریف 7 ماہ بعد بھی تیار نہیں‘ عمران خان

اسلام آباد: پاکستان تحریکِ انصاف کے سربراہ عمران خان کا کہنا ہے کہ سات ماہ بعد بھی وزیراعظم عدالت میں جواب دینے کے لیے تیار نہیں ہیں، اگر اپارٹمنٹ 2006 میں خریدے مسلم لیگ ن کے وزرأ پہلے کیسے چلے گئے؟۔

تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے اپنی رہائش گاہ بنی گالہ پر پنامہ کیس کے حوالے سے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ نے وزیراعظم کو دو ہفتوں کی مطلوبہ مدت کے بجائے آئندہ منگل کو طلب کیاہے جو کہ خوش آئند بات ہے۔

انہوں نے وزیراعظم کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ وہ سات ماہ قبل عوام سے کہتے تھےکہ وہ عدالتی کارروائی کے لیے تیار ہیں ‘ اور اب عدالت سے تیاری کے لیے وقت مانگ رہے ہیں۔

انہوں نے مزید بتایا کہ عدالت نےچار سوال پوچھے اور کہا ہے کہ اگر وزیر اعظم جواب دے دیں تو ہوسکتا ہے کہ کمیشن ہی نہ بنانا پڑے‘ بلکہ یہی عدالت پنامہ کیس کا فیصلہ کردے۔


سپریم کورٹ کاتمام فریقین کو15نومبرتک دستاویزات جمع کرنے کا حکم


عمران خان کے مطابق عدالت نے کہا ہے کہ ’’کیس کو لمبا نہیں جانے دیں گے‘ عدالت نے نیب پر بھی بات کی کہ وہ ہاتھ کھڑے کر بیٹھے ہیں۔ اگر وہ چاہتے از خود کارروائی کرسکتے تھے‘‘۔

2006 عمران خان نے کہا کہ شریف خاندان کہتا ہے کہ مے فیئر کے اپارٹمنٹس 2006 میں لیے ، کلثوم نواز کہتی ہیں کہ بچوں کی تعلیم کے لیے خریدے، چوہدری نثار اور دیگر وزراء کے مطابق وہ اپارٹمنٹ90 کی دہائی میں خریدے گئے ہیں۔ عمران خان نے کہا کہ مجھے تو خود شرم آتی ہے کہ اگر یہ اپارٹمنٹ 90 میں خریدے گئے تو میں 1998 میں کس کے گھر کے باہر لندن میں مظاہرہ کرر ہا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں