The news is by your side.

Advertisement

امیدواروں کو ٹکٹ میرٹ پر دیئے گئے، اقتدار میں آکر ملک کو بدل دیں گے، عمران خان

میانوالی : تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی میں ٹکٹ میرٹ پر دیئے گئے ہیں، جن امیدواروں کوٹکٹ نہیں ملا ان سے معذرت چاہتا ہوں، اقتدار میں آکر پورے ملک کو بدل دیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے میانوالی میں انتخابی مہم کے پہلے عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا، عمران خان نے کہا کہ تحریک انصاف کا پودا میانوالی میں لگا تھا اسی لیے الیکشن 2018کی انتخابی مہم میانوالی سے شروع کررہاہوں، میانوالی تب میرے ساتھ کھڑا تھا جب کوئی ساتھ نہ تھا،2002کےالیکشن میں ایک سیٹ جیتا تھا جو کبھی نہیں بھول سکتا، ساتھ کھڑے رہنے پرمیانوالی کےکارکنوں کا شکریہ ادا کرتاہوں۔

عمران خان نے کہا کہ پی ٹی آئی وہ جماعت بننے جارہی ہے جہاں صرف میرٹ پر ٹکٹ ملیں گے، ٹکٹوں کی تقسیم کے معاملے پر بہت دباؤ تھا، میرے گھر کے لوگ بھی کہہ رہے ہیں کہ ہمیں ٹکٹ نہیں ملے، ہم نے پوری کوشش کی کہ پارٹی ٹکٹ میرٹ پر دیئےجائیں، ابھی بھی ٹکٹوں کے معاملے پر نظرثانی کررہے ہیں، میں یقین دلاتا ہوں کہ ٹکٹ نیک نیتی سے دیئے گئے جن کو نہیں مل سکے اس نے معذرت خواہ ہوں۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے شریف برادران پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یاد ہے ناں کس نے کہا تھا کہ لوڈشیڈنگ 3ماہ میں ختم نہ ہوئی تو میرانام بدل دینا، نوازشریف جہاں جاتا تھا کہتا تھا میں موٹر وے بنادوں گا، شہبازشریف کہتا ہے بجلی بنادی ہے اب نگراں حکومت جانے اورآپ جانیں، سابق وزیراعلیٰ پنجاب کیا بجلی بنا کر جاتے ہوئے اپنے ساتھ شاپنگ بیگ میں ڈال لے کر گئے؟

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ حکمرانوں نے کرپشن چھپانے کیلئے40ارب روپے کے اشتہار دیئےگئے، اشتہاروں میں بجلی بن رہی ہے اور وہی ترقی ہورہی ہے، اشتہاروں میں قائداعظم سولرپارک، نندی پور بن گیا، ملک پر کبھی اتنا قرضہ نہیں چڑھا جتنا ان دو بھائیوں کے دور میں چڑھا دیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ،2013میں پاکستان کا قرضہ 13ہزار ارب روپے تھا جو اب بڑھ کر5سالوں میں27ہزار ارب روپے پر پہنچ گیا ہے جبکہ پچھلے60سالوں میں پاکستان پر قرضہ 6ہزار ارب روپے تھا، اسحاق ڈار، نوازشریف اور شہبازشریف کے بچے اربوں پتی بن گئے جبکہ ہر پاکستانی پر قرضہ چڑھ گیا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جون 2013میں ایک ڈالر 100روپے کا تھا، آج2018میں ایک ڈالر 125روپے پرپہنچ گیا ہے، اگرآپ کے بینک میں 125روپے پڑے تھے تو وہ آج صرف100روپیہ رہ گیا ہے، گزشتہ پانچ سال میں ملک کا36ہزارارب روپے کا نقصان کیا گیا، یہ 36ہزار ارب کی قیمت عوام مہنگائی اور غربت سے ادا کرے گی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں