The news is by your side.

Advertisement

راوی اربن ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا افتتاح: ’لاہور میں کراچی جیسی پانی کی قلت کا خدشہ ہے‘

لاہور: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ہمیں لاہور کے لیے اقدامات کرنا ہوں گے کیونکہ اب شہر آلودہ ہوگیا ہے اور یہاں پانی کی قلت کا خدشہ بھی ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق وزیراعظم نے شاہدرہ میں راوی اربن ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی افتتاحی تقریب میں شرکت کی۔ شرکا سے خطاب کرتے ہوئے اُن کا کہنا تھا کہ ’دنیا بھر سے ہریالی ختم ہوتی جارہی ہے کیونکہ پانی اپنی سطح سے نیچے جاررہا ہے، ہمیں مستقبل میں فوڈ سیکیورٹی کے مسائل کا سامنا بھی کرنا پڑے گا‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’آج ملک میں گندم کابحران ہے اورگنےکی پیداوارختم ہوگئی ہے، گندم بحران کے اور بھی مسائل ہیں جنہیں حل کریں گے، ایسے بحرانوں کی وجہ سے ہمیں  بیرون ممالک سےچیزیں درآمدکرنا پڑ رہی ہے، پاکستان میں کبھی گندم کی کمی نہیں ہوئی مگر اس بار ڈیڑھ ملین ٹن کم پیداوار ہوئی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ’جیسے کراچی کو پانی کے مسئلے کا سامنا ہے ایسے مسائل لاہور میں بھی آئیں گے، ہمیں لاہور کے مسائل پر توجہ دینا ہوگی، لاہورکو ہم نے ماڈرن شہر بنانا ہے اور سیوریج کےمسائل حل کرنا ہیں، لاہورمیں آبادی بڑھنے کاخطرہ بڑھ گیا، ہم اس شہرکو ماڈرن بنائیں گے تب ہی یہاں ترقی ہوگی، راوی پر نئے بیراجز بنیں گے، جہاں شہرکا پانی فلٹر کرکےدیاجائےگا‘۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ’اب ضرورت اس امر کی ہے کہ نئے شہر آباد کیےجائیں،  راوی ایک بڑا دریا تھا آج سکڑ کر ایک سیم نالہ بن گیا ہے،  روای منصوبہ نہ بنا تو لاہور کے مسائل بڑھ جائیں گے، اس لیے ہم نے پچاس ہزار ارب کی مالیت کا منصوبہ شروع کرنے کا نہ صرف فیصلہ کیا بلکہ اسے مکمل کرنے کا بھی ارادہ  کیا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ  منصوبے میں اوورسیز پاکستانی بھی سرمایہ کاری کرسکتے ہیں،90لاکھ اوورسیزپاکستانیوں کےلیے یہ منصوبہ بہترین موقع ہے، اس منصوبے سے لوگوں کو روزگار ملے گا کیونکہ تعمیراتی شعبے کے ساتھ مزید 40 صنعتیں چلنا شروع ہوجاتی ہیں، اسلام آباد کے بعد یہ دوسرا بڑا پروجیکٹ ہے جہاں شہرآباد ہونے جارہا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ’اپنی ٹیم کوسمجھایا یہ مشکل پروجیکٹ ہے، اس لیے ہمیں مشکلات اور رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑے گا، اگر رکاوٹیں نہ ہوتی تو2004 میں منظور ہونے والا یہ پروجیکٹ اب تک تیار ہوچکا ہوتا، ہماری ٹیم مشکلات اور رکاوٹوں کے باوجود اس منصوبے کو مکمل کرے گی کیونکہ ہم نے کشتیاں جلا دی ہیں اور اب پیچھے ہٹنے کی کوئی گنجائش نہیں ہے‘۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اس پروجیکٹ کی میں خود نگرانی کروں گا جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب بھی منصوبے پر نظر رکھیں گے، ہم نے افتتاحی تقریب کے لیے 6 ماہ قبل محنت شروع کی کیونکہ راوی اربن ڈویلپمنٹ اتھارٹی جیسے منصوبےملک کو فائدہ دیتےہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’2سال کےبعداب وہ وقت آیا ہے ہم آگے بڑھیں اور ترقی کی منازل طے کریں، ہم نے جو کچھ بھی اچھا کام شروع کیا تو  این آر او ٹولے نے کام میں رکاوٹیں ڈالیں‘۔ اُن کا مزید کہنا تھا کہ ’پاکستان کو مشکل معاشی صورتحال سامنا رہا ہے مگر ہم ملک کو اس مشکل سے نکالنے کے لیے اقدامات کررہے ہیں‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں