کسی کوزبردستی اسلام قبول کرانا اسلام کے خلاف ہے،عمران خان imran khan
The news is by your side.

Advertisement

زبردستی اسلام قبول کرانا دین کے خلاف ہے،عمران خان

کراچی : چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ اسلام میں کسی قسم کا جبر نہیں ہے اور نہ ہی کسی کو مذہب تبدیل کرانے کا اختیار حاصل ہے۔

سربراہ تحریک انصاف دیوالی کی مناسبت سے ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے انہوں نے کہا کہ ہم سب کے لیے قائد اعظم کی تعلیمات مشعل راہ ہیں جو مسلمان اور ہندو اتحاد کے سفیرسمجھے جاتے تھے۔

عمران خان نے کہا کہ قائد اعظم محمدعلی جناح نے ایک مقصد کے لئے پاکستان بنایا تھا جہاں تمام اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ کی بات کی گئی تھی چنانچہ قائد اعظم کے پاکستان میں کسی مذہبی اقلیت کے ساتھ ناروا سلوک ہو یہ ممکن نہیں۔

انہوں نے کہا کہ اندرون سندھ ہندوؤں کو جبرآ مسلمان کرنے کی خبریں آتی رہتی ہیں جس کی نہ تو مذہب اسلام اجازت دیتا ہے اور نہ ہی آئین پاکستان میں ایسی کوئی بات ہے اور ایسے اقدام قائد اعظم کے نظریات کے بھی منافی ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ اسلام میں کوئی جبر نہیں خود نبی آخرالزماں صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے مکہ کے دو عمر میں سے ایک کو مسلمان کرنے کے لیے دعا کی تھی جس کے بعد جناب عمر بن خطاب لذت اسلام سے سیراب ہوئے تھے۔

انہوں نے کہا کہ ہندو برادری کو دیوالی کی مبارک باد دیتا ہوں اور سندھ حکومت کو کہتا ہوں کہ ان کے تحفظ کے لیے اقدامات کریں کیوں ہندو بھائیوں کو کوبھی وہی حقوق حاصل ہیں جو کہ کسی پاکستانی کے ہوتے ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں