The news is by your side.

Advertisement

ایٹمی حملے کی روسی دھمکی کے بعد بیلجیم میں‌ آیوڈین کی گولیاں‌ مفت بٹنے لگیں

برسلز: ایٹمی حملے کی روسی دھمکی کے بعد بیلجیم میں‌ آیوڈین کی گولیاں‌ مفت بٹنے لگیں۔

تفصیلات کے مطابق روس کے ایٹمی حملے کے خدشے کے شکار یورپ کے دیگر ممالک کی طرح بیلجیم میں بھی تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

یوکرین پر روسی ایٹمی حملے کے خدشے کے پیش نظر بیلجیم میں آیوڈین کی گولیاں فارمیسیز میں مفت فراہم کی جا رہی ہیں، گزشتہ روز 30 ہزار سے زائد افراد نے گولیاں حاصل کیں۔

ماہرین کے مطابق ایٹمی حملے کی صورت میں یہ گولیاں تھائیرائڈ کی حفاظت کریں گی۔

زپورئیژا جوہری پلانٹ کب سے کنٹرول میں ہے؟ روس نے بتا دیا

واضح رہے کہ عالمی رہنماؤں نے روس پر الزام لگایا ہے کہ اس کی افواج نے یوکرین میں زپورئیژا جوہری پاور پلانٹ پر گولہ باری کر کے پورے براعظم کی حفاظت کو خطرے میں ڈال دیا ہے، برطانیہ کے وزیر اعظم بورس جانسن نے کہا ہے کہ یہ حملہ پورے یورپ کی سلامتی کو براہ راست متاثر کر سکتا ہے، امریکی صدر جو بائیڈن نے روس پر زور دیا کہ وہ جوہری پلانٹ کے ارد گرد اپنی فوجی سرگرمیاں روک دے۔

تاہم دوسری طرف روس کی وزارت دفاع نے اس حملے کا الزام یوکرین کے تخریب کاروں پر عائد کرتے ہوئے اسے ایک ’بدمعاشی اشتعال انگیزی‘ قرار دے دیا ہے، اور کہا ہے کہ زپورئیژا جوہری پلانٹ پانچ دنوں سے روسی فوج کے قبضے میں ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں