The news is by your side.

Advertisement

سسر نے ہونے والے داماد کو کمرے میں بند کردیا

کینیڈا سے تعلق رکھنے والے 28 سالہ نوجوان نے انکشاف کیا ہے کہ اُسے ساس سسر نے گھر بلا کر کمرے میں بند کردیا۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم ریڈ اٹ پر ایک شہری نے اپنی کہانی شیئر کی اور انکشاف کیا کہ ساس سسر نے اُسے اپنے گھر بلا کر تنخواہ پوچھی اور نہ بتانے پر موبائل چھین کر کمرے میں بند کردیا۔

کینیڈین شہری نے پوسٹ میں دعویٰ کیا کہ ’میری منگیتر کے والد سنار کا کام کرتے ہیں، انہوں نے فون پر اپنے گھر کھانے پر مدعو کیا، جب میں پہنچا تو انہوں نے ملازمت کے حوالے سے گفتگو شروع کی‘۔

’میں نے حال ہی میں نئی ملازمت شروع کی، اس حوالے سے ساس سسر معلومات حاصل کرنا چاہتے تھے، انہوں نے گفتگو کے دوران تنخواہ بتانے پر اصرار کیا، جس پر میں نے کوئی جواب نہیں دیا اور مسلسل سوال پر انکار کیا‘۔

پوسٹ میں شہری نے بتایا کہ ’میں نے انہیں یقین دلایا کہ آپ کی بیٹی کا مستقبل محفوظ ہوگا، اُسے کسی قسم کی کوئی پریشانی نہیں ہوگی اور میں ہی تمام اخراجات پورے کروں گے‘۔

’گفتگو کے دوران سسر نے کھانے کی میز پر مجھے چابیاں اور موبائل فون رکھنے کا کہا اور جب وہ مطمئن نہ ہوسکے تو موبائل اور چابیاں اٹھا کر کمرے سے باہر گیے اور دروازہ بند کردیا‘۔

مذکورہ شخص نے اپنے ہونے والے سسر کو لالچی قرار دیتے ہوئے لکھا کہ ‘مجھے سسر کی اس حرکت پر شدید غصہ آیا کیونکہ میرے لیے یہ رویہ ناقابلِ قبول ہے، اس تمام واقعے پر جب غصے کا اظہار کیا  تو کمرے کا دروزہ کھلا اور موبائل و چابی تھما کر جانے جانے کی اجازت دی گئی‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں