The news is by your side.

Advertisement

فیس ماسک کس صورت میں تبدیل کرنا چاہئے؟

کراچی: کرونا وائرس کے باعث فیس ماسک کی مانگ میں اضافہ ہوگیا ہے اور شہریوں کی جانب سے فیس ماسک پہننے کے لیے انہیں مہنگے داموں بھی خریدا جارہا ہے، متوسط طبقے کے افراد اسے پہننے کے لیے اپنی استطاعت کے مطابق استعمال کررہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ماہرین کی جانب سے کرونا وبا سے بچاؤ کے لیے فیس ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے تاکہ وائرس سے بچا جاسکیں لیکن صرف ماسک پہننے اور محفوظ ماسک پہننے میں بڑا فرق ہے۔

فیس ماسک ایک وقت میں آپ کو وائرس سے بچانے یا مکمل تحفظ کرنے میں ناکام ہوجاتا ہے اور یہی وہ وقت ہوتا ہے کہ آپ کو چاہئے کہ ماسک کو تبدیل کردیں یا پھر لازمی اسے دھو کر دوبارہ استعمال کریں۔

فیس ماسک پر یہ علامات یا نشانیاں موجود ہوں تو آپ اپنا ماسک فوری تبدیل کردیں۔

کرونا کی علامات کے سبب ماسک کی تبدیلی

اگر آپ کو کرونا وائرس کی علامات ظاہر ہورہی ہیں تو آپ کو چاہئے کہ اپنا ماسک تبدیل کردیں تاکہ آپ اور آپ کے پیارے بھی وبا سے محفوظ رہ سکیں یا پھر دوسری صورت میں اسے بار بار دھوکر خشک کریں اور پھر اس کا استعمال کریں۔

مریض کی عیادت

اگر آپ اسپتال میں کسی مریض کی تیماری داری کررہے ہیں یا کسی ایسے فرد کے قریب موجود ہیں جس پر آپ کو شبہ ہے کہ اس میں وائرس کی علامات ہیں تو آپ کو چاہئے کہ ماسک تبدیل کریں تاکہ آپ وبا سے محفوظ رہ سکیں۔

مختلف جگہوں کو ہاتھ لگانے کے بعد ماسک کو چھونا

ممکنہ طور پر وائرس سے ممکنہ خطرہ دروازوں کے ہینڈل، خریداری کے دوران استعمال کی جانے والی ٹرالی، ڈیلیوری بیگز کو چھونے سے بھی ہوسکتا ہے اگر آپ نے ان چیزوں کو ہاتھ لگانے کے بعد ماسک کو چھوا ہے تو ماسک تبدیل کریں اور کپڑے کا ماسک ہونے کی صورت میں اسے فوراً دھو کر قابل استعمال بنائیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں