پنجاب اسمبلی میں نو منتخب اراکین نے حلف اٹھا لیا -
The news is by your side.

Advertisement

پنجاب اسمبلی میں نو منتخب اراکین نے حلف اٹھا لیا

لاہور: صوبہ پنجاب کی پندرہویں اسمبلی کے نو منتخب ارکان نے حلف اٹھا لیا۔ ایوان کے اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کا انتخاب 17 اگست کو ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن 2018 کے بعد پنجاب اسمبلی کا پہلا اجلاس اسپیکر رانا محمد اقبال کی زیر صدارت ہوا۔

اسپیکر رانا محمد اقبال نے نومنتخب اراکین سے حلف لیا۔ اسمبلی کے 371 کے ایوان میں 12 نشستیں خالی ہیں۔

پنجاب اسمبلی میں تحریک انصاف کے 179 ممبران نے حلف اٹھایا۔ تحریک انصاف کے 139 جنرل، 33 خواتین اور 4 اقلیتی ارکان ہیں۔

مسلم لیگ ن کے 164 ارکان نے حلف اٹھایا، ن لیگ کے 128 جنرل، 30 خواتین اور 4 اقلیتی ارکان ہیں۔

مسلم لیگ ق کے 10، پیپلز پارٹی کے 7، راہ حق پارٹی کا ایک اور 4 آزاد ارکان بھی حلف اٹھانے والوں میں شامل ہیں۔

پنجاب اسمبلی میں 50 ایسے بھی ارکان شامل ہیں جو پانچویں، تیسری اور دوسری دفعہ اسمبلی میں واپس پہنچے ہیں۔

سنہ 1985 کے غیر جماعتی انتخاب میں کامیاب ہونے والے چوہدری اقبال گجر مسلسل نویں بار، اسپیکر رانا محمد اقبال پانچویں مرتبہ، میاں یاور زمان، مجتبیٰ شجاع الرحمٰن چوتھی، رانا مشہود، خواجہ عمران نذیر، خواجہ سلمان رفیق، شیخ علاؤ الدین، بلال یاسین، خلیل طاہر سندھو اور حمیدہ وحیدالدین سمیت ڈیرھ درجن ارکان تیسری بار اسمبلی پہنچے ہیں۔

میاں محمود الرشید، میاں اسلم اقبال، سبطین خان اور جہانگیر خانزادہ سمیت 3 درجن سے زائد ایسے ارکان بھی شامل ہیں جو مسلسل دوسری مرتبہ اسمبلی پہنچے ہیں۔ راحیلہ خادم حسین تیسری مرتبہ مخصوص اسپیشل سیٹ پر کامیاب ہوئیں۔

ذکیہ شاہنواز، حنا پرویز، عظمیٰ زاہد بخاری اور مہوش سلطانہ سمیت مسلم لیگ ن اور تحریک انصاف کی ٹکٹ پر درجن بھر ایسی خوش نصیب ارکان موجود ہیں جو دوسری مرتبہ ایوان میں پہنچی ہیں۔

صوبائی سطح پر 90 کے عام انتخابات سے مسلسل کامیاب ہونے والے رانا ثنا اللہ اور 3 مرتبہ قائد ایوان رہنے والے شہباز شریف اب اسمبلی کا حصہ نہیں ہوں گے۔ کھوسہ اور لغاری خاندان مرکز کے بعد صوبے سے بھی آؤٹ جبکہ دریشک خاندان ایک عرصے بعد صوبائی اسمبلی میں دوبارہ واپس آیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں