The news is by your side.

Advertisement

احتساب عدالت میں جگہ کم پڑ گئی، جعلی اکاؤنٹس ریفرنسز میں مسلسل اضافہ

اسلام آباد: جعلی اکاؤنٹس ریفرنسز میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے جس کے باعث احتساب عدالت میں جگہ کم پڑ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق قومی احتساب بیورو کی جانب سے احتساب عدالت میں جعلی اکاؤنٹس کے زمرے میں دائر کیے جانے والے ریفرنسز کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے، اسلام آباد میں تیسری احتساب عدالت بنائی جائے گی۔

آج کسانوں کے لیے سب سڈی میں خورد برد ریفرنس میں 2 گاڑیاں بھر کر متعلقہ افراد کو عدالت لایا گیا، 40 ملزمان کے لیے بنائی گئی نقول کے صفحات 2 لاکھ سے تجاوز کر گئے ہیں۔

احتساب عدالت نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں فرد جرم کے لیے انور مجید، اے جی مجید سمیت 40 ملزمان کو طلب کر لیا، عدالت نے حکم دیا کہ تمام ملزمان کو 2 جنوری کو پیش کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیں:  جعلی اکاؤنٹس کیس میں نیب نے آٹھواں ریفرنس دائر کر دیا

نیب کا کہنا ہے کہ انور مجید، عبد الغنی مجید، نمر مجید، مناہل، سمیت اس ریفرنس میں 40 ملزمان نامزد ہیں، ملزمان کروڑوں سرکاری سب سڈی فنڈز کے غلط استعمال میں ملوث ہیں، 3.9 ارب روپے کی سبسڈی حقیقی کاشت کاروں تک پہنچ ہی نہیں سکی تھی۔

یاد رہے کہ 9 دسمبر کو قومی احتساب بیورو نے سندھ بینک قرضوں سے متعلق کرپشن کا ریفرنس دائر کیا تھا، یہ جعلی اکاؤنٹس کیس کا آٹھواں ریفرنس تھا، جس میں بلال شیخ اور طارق احسن سمیت 20 ملزمان نامزد کیے گئے تھے۔

ریفرنس کے مطابق ملزمان پر اومنی گروپ کو 29 ارب روپے قرضہ دینے کا الزام ہے، 29 ارب میں سے 25 ارب روپے تا حال واجب الادا ہیں، 1.84 بلین روپے اومنی کی 3 بے نامی کمپنیوں کو فراڈ کے ساتھ دیے گئے، جب کہ 1.84 بلین روپے کا قرضہ سمٹ بینک کے کیپٹل پورا کرنے کے لیے دیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں