The news is by your side.

Advertisement

بھارت : قتل کی ہولناک واردات، تین افراد کے سرتن سے جدا کردیے

نئی دہلی : بھارت میں جادو ٹونہ کرنے کے الزام میں مشتعل افراد نے تین افراد کا انتہائی بے دردی سے قتل کردیا، پولیس نے میاں بیوی اور بیٹی کے قتل میں ملوث تین ملزمان کو گرفتار کرلیا۔

بھارت کی ریاست جھاڑکھنڈ میں جادوگردی کے شبے میں ماں باپ اور بیٹی کا اغوا کے بعد سر قلم کردیا گیا، پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے ملزمان کو حراست میں لے لیا۔

گزشتہ روز رانچی سے 40 کلومیٹر دور واقع قبائلی اکثریتی علاقے خنٹی سے ایک ہی خاندان سے تعلق رکھنے والے تین افراد کی سر بریدہ نعشیں برآمد کیں۔ تینوں مقتولین کو جادو ٹونہ کرنے کے الزام میں مبینہ طور پر تین ہفتے قبل اغوا کرکے ہلاک کردیا گیا۔

ملزمان نے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے پولیس کو بتایا کہ ماں بیٹی اور اس کے والد کو اس لئے قتل کیا گیا کہ وہ جادو ٹونہ کرتے تھے۔ پولیس کے مطابق خاندان کا بے دردی سے سر قلم کیا گیا تھا اورہلاک افراد کے سروں کو کسی اور جگہ سے برآمد کیا گیا ہے۔

پولیس نے بتایا کہ ملزمان نے مقتولین کی شناخت چھپانے کیلئے سروں کو دھڑ سے الگ کردیا تھا ان کے سر ایک تالاب کے قریب الگ مقام سے برآمد ہوئے ہیں جبکہ لاشوں کو پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق ہلاک افراد کی شناخت48 سالہ بریسا منڈا اس کی بیوی43 سالہ سکرو پورٹی اور 20 سالہ سومری پورٹی کے نام سے ہوئی ہے۔

پولیس حکام کے مطابق مقتولین کے دیگر اہل خانہ کی گمشدگی کا انکشاف اس وقت ہوا جب بریسا کی بڑی بیٹی نے 12 اکتوبر کو اپنے لاپتہ والدین اور اس کے بھائی کے بارے میں پولیس میں شکایت درج کروائی تھی، پولیس کا کہنا ہے کہ بریسا کی بیٹی جو شادی شدہ ہے اپنے والدین سے ملنے گئی تھی لیکن اسے گھر کا دروازہ بند تھا۔

شادی شدہ بیٹی نے اپنے بیان میں کہا کہ گاؤں کے تین افراد سوما منڈا ، وشرم منڈا اور رگھو منڈا زمین کے تنازعہ کے معاملے میں میرے اہل خانہ کے ساتھ جھگڑا کررہے تھے، منڈوں نے میری والدہ کو ڈائن کہا تھا جس کی وجہ سے وہ جھگڑا ہوا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں