The news is by your side.

Advertisement

بھارت: کسانوں کی نئی حکمت عملی، مودی کے ہوش ٹھکانے آگئے

نئی دہلی: بھارت میں متنازع زرعی قوانین کے خلاف کسان تاحال سراپا احتجاج ہیں، وہ اپنے مطالبات سے پیچھے ہٹنے کے لیے بھی تیار نہیں اور اب کسانوں نے نئی حکمت عملی بھی اپنا لی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق متنازع قوانین کے خلاف تحریک میں شامل کسانوں نے کنڈلی بارڈ کے اطراف رہائش کے لیے جھونپڑیاں بنانا شروع کردی ہیں جس کے باعث جی ٹی روڈ کا نظارہ ہی تبدیل ہوگیا۔ کسان قبل ازیں پختہ تعمیرات کروا رہے تھے لیکن مقدمات درج ہونے پر انہوں نے فیصلہ تبدیل کیا۔

Rajasthan farmers build huts for Mahapanchayat - Bhaskar Live English News

رپورٹ کے مطابق مظاہرین اور دھرنے میں شریک کسان اب جی ٹی روڈ پر جھونپڑیاں تیار کررہے ہیں جہاں ٹریکٹر اور ٹرالیوں کی جگہ چھوٹی چھوٹی جھونپڑیوں نے لی ہے۔

Farmers protest | Farmers build 'permanent' houses at Tikri border,  planning 2,000 similar shelters in coming days | India News

دہلی بارڈرز پر کسان گزشتہ چار ماہ سے دھرنا دیے بیٹھے ہیں اور وہ اپنے مطالبات پورے ہونے تک واپس نہیں جانا چاہتے، یہی وجہ ہے کہ انہوں نے کنڈلی بارڈ کے مقام پر عارضی جھونپڑیاں بنانا شروع کردی ہیں۔

کسان تحریک، ایک اور کسان نے جان دے دی

خیال رہے کہ اس سے قبل مظاہرین نے سڑک پر پختہ تعمیرات شروع کردی تھی لیکن انتظامیہ کے ایکشن لینے پر کسانوں نے نیا منصوبہ بنایا اور اب روڈ ایک بستی کا منظر پیش کررہا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں