The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں اندھیر نگری : ایک اور کسان نے موت کو گلے لگا لیا

علیگڑھ : بھارت میں ایک کسان نے بجلی کی بل حد سے زیادہ آنے پر موت کو گلے لگا لیا، اہل خانہ کا الزام ہے کہ بحث کے دوران محکمہ بجلی کے افسران نے انہیں تھپڑ مارا تھا۔

بھارتی ریاست علی گڑھ کے اترولی تحصیل کے گاؤں سنیرا میں ایک 50 سالہ کسان نے خودکشی کرلی ہے کیونکہ اسے1500کے بجائے ڈیڑھ لاکھ روپے کا بجلی کا بل بھیج دیا گیا تھا۔

متوفی کسان کے بھتیجے رام چرن اور خاندان کے دیگر افراد نے تھانہ برلا میں درج کرائی گئی رپورٹ میں الزام عائد کیا ہے کہ بجلی کے بل میں1500 روپے کی رقم کو غلط طریقے سے 1لاکھ 50،000 روپے دکھایا گیا تھا۔

اہل خانہ کا کہنا ہے کہ کچھ افسران گھر پر آئے اور انہیں 1 لاکھ 50 ہزار روپے کا بجلی بل تھما دیا۔ جب رام جی لال نے محکمہ بجلی کے افسران سے کہا کہ ان کے پاس ادائیگی کرنے کے لیے اتنے پیسے نہیں ہیں اور انہوں نے بل کو ٹھیک کرنے کا بھی کہا جس پر ایک افسر نے مبینہ طور پر انہیں تھپڑ مار دیا۔

متوفی رام جی لال کے ایک خانہ کے مطابق جب ساری کوششیں ناکام ہو گئیں، تو تھک ہار کر انہوں نے پھانسی کا پھندا لگا کر خودکشی کرلی۔

بعد ازاں متوفی کے لواحقین اور مقامی افراد نے بجلی محکمہ کے دفتر کے سامنے لاش رکھ کر واقعہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ذمہ داران کیخلاف کاروائی کا مطالبہ کیا۔ پولیس نے مظاہرین کو یقین دلایا کہ ضروری کارروائی اور تحقیقات کے بعد کوئی قدم اٹھایا جائے گا۔

اترولی کے ایس ڈی ایم پنکج کمار نے کہا کہ قصور وار پائے جانے والوں کے خلاف ضروری کارروائی کی جائے گی اور ابتدائی تحقیقات کے بعد مقدمہ بھی درج کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں