The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں انسانیت شرما گئی : اجتماعی زیادتی کی شکار لڑکی دوران علاج ہلاک

نئی دہلی : بھارت میں نچلی ذات کے ہندوؤں کی زندگی کو اجیرن کردیا گیا، دو ہفتے قبل اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنائی جانے والی لڑکی اسپتال میں دوران علاج دم توڑ گئی۔

تفصیلات کے مطابق خود کو دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت کے دعویدار کہنے والے بھارت میں مسلمان تو کیا خود ہندوؤں کی زندگی بھی عذاب بنادی گئی، نچلی ذات کے ہندو خود کو غیر محفوظ سمجھنے لگے۔

رواں ماہ 14سمتبر کو ایک لڑکی کے ساتھ اجتماعی جنسی زیادتی کا واقعہ پیش آیا تھا، جس کے بعد متاثرہ لڑکی کو اے ایم یو کے جواہر لال نہرو میڈیکل کالج میں داخل کرایا گیا تھا جہاں طبیعت زیادہ خراب ہونے پر اسے ایمس ریفر کردیا گیا تھا۔

اترپردیش کے ضلع ہاتھرس میں اجتماعی جنسی زیادتی کی شکار 19 برس کی دلت لڑکی کی علاج کے دوران آج موت ہوگئی۔ اس کی حالت میں بہتری کے آثار ظاہر نہ ہونے کے ایک روز قبل ہی انہیں ایمس، دہلی منتقل کردیا گیا تھا۔

14سمتبر کے روز مذکورہ لڑکی کے ساتھ اجتماعی جنسی زیادتی ہوئی تھی جس کے بعد اسے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے جواہر لال نہرو میڈیکل کالج میں داخل کرایا گیا تھا جہاں اس کی طبیعت میں بہتری نہ ہونے کی وجہ سے اسے دہلی کے ایمس اسپتال ریفر کردیاگیا تھا۔

اطلاعات کے مطابق ملزمان نے اجتماعی جنسی زیادتی کے بعد متاثرہ لڑکی کی زبان بھی کاٹ دی تھی جس کی وجہ سے وہ بول نہیں سکتی تھی، اجتماعی زیادتی میں ملوث چاروں ملزمان جیل میں ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں