The news is by your side.

Advertisement

بھارت: کرونا اسپتال میں ملازمت کا جھانسا، نوجوانوں سے کروڑوں بٹور لیے گئے

بریلی: بھارتی ریاست اتر پردیش میں کرونا اسپتال میں ملازمت کا جھانسا دے کر نوجوانوں سے کروڑوں روپے بٹور لیے گئے۔

تفصیلات کے مطابق اتر پردیش کے شہر بریلی میں محکمہ صحت کے اہل کاروں نے ملازمت کے نام پر 47 نوجوانوں سے کروڑوں روپے بٹور لیے۔

مقامی پولیس نے ملازمت دلانے کے نام پر کروڑوں روپے کی جعل سازی کے معاملے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

نوجوانوں کا کہنا تھا کہ کرونا کے اس پر آشوب دور میں برباد معیشت اور بڑھتی بے روزگاری کے دوران انھیں موقع کی جگہ دھوکا ملا ہے۔

نوجوانوں نے جعل سازی کا شکار ہونے کے بعد ضلع بریلی کے ایس ایس پی کے دفتر پر جمع ہو کر احتجاج کیا، ان کا کہنا تھا کہ محکمہ صحت کے اہل کاروں نے ان کے ساتھ جعل سازی کی ہے، انھیں انصاف دلایا جائے۔

رپورٹ کے مطابق اہل کاروں نے کو وِڈ کے تین سو بستروں کے اسپتال میں ملازمت دلانے کے نام پر 47 نوجوانوں سے فی نوجوان 3 سے 4 لاکھ روپے کی وصولی کی۔

نوجوانوں کو جعلی تقرری لیٹر بھی جاری کیا گیا تھا، تاہم جب وہ تقرری لیٹر لے کر کو وِڈ اسپتال پہنچے تو ان پر جعل سازی کا انکشاف ہوا، جعل سازی میں ضلع بریلی کے علاوہ پیلی بھیت کے نوجوانوں کو بھی شکار بنایا گیا ہے۔

نوجوانوں کا کہنا تھا کہ محکمہ صحت کے سی ایم او کے دفتر میں خود کو بابو بتانے والے ایک کلرک نے گزشتہ برس اگست میں کہا تھا کہ کو وِڈ کے 300 بیڈڈ اسپتال میں چپراسی، سُپر وائزر، کمپیوٹر آپریٹر، لیب ٹیکنیشین، ڈرایئور، وارڈ نرس اور وارڈ بوائے کی اسامیوں پر لوگوں کو ملازمت پر رکھا جائےگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں