The news is by your side.

Advertisement

غلط بیانی، بھارت کو ایک مرتبہ پھر عالمی سطح پر شرمندگی کا سامنا

نئی دہلی: بھارت جھوٹے پروپیگنڈے اور غلط بیان بازی سے باز نہ آیا جس کی وجہ سے بھارت کو ایک مرتبہ پھر عالمی سطح پر شرمندگی کا سامنا ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق بھارتی حکومت نے کرونا وائرس کے خلاف ملک میں اقدامات پر تعریف کو ٹویٹ کیا تو آکسفورڈ یونیورسٹی نے بھارتی دعوے کو من گھڑت اور جھوٹا قرار دے دیا۔

بھارت میں کرونا وائرس سے 300 افراد ہلاک ہوچکے ہیں

بی جے پی حکومت نے اقدامات کو آکسفورڈ یونیورسٹی کی جانب سے 100 نمبر دئیے، آکسفورڈ یونیورسٹی ٹریکر پر نمبرز یا درجہ بندی کا کوئی وجود ہی نہیں تھا۔

واضح رہے کہ کرونا وائرس پر آکسفورڈ یونیورسٹی پر حکومتوں کے اقدامات کا صرف اسٹرینجنسی انڈیکس ریکارڈ کیا جارہا ہے۔

بھارتی ریاست مہاراشٹرا میں کرونا کے 325 نئے کیسز کی تصدیق کے بعد بھارت میں رجسٹرڈ کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد 2300 سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ کرونا سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 300 ہوچکی ہے۔

بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے بھارت بھر میں لاک ڈاؤن میں توسیع کرتے ہوئے اسے 30 اپریل تک بڑھا دیا تھا جبکہ بھارتی میڈیا غلطی سے اسے 40 اپریل کہہ بیٹھا تھا۔

یاد رہے کہ بھارت میں لاک ڈاؤن کی وجہ سے عوام اذیت میں مبتلا ہیں اور مودی نے بغیر سوچے سمجھے چند روز قبل کرفیو بھی نافذ کردیا تھا جس پر انہیں تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں