The news is by your side.

Advertisement

بھارت: اسکول انتظامیہ نے 14 سالہ طالبہ کو بچے کے ساتھ بھٹکنے کے لیے جنگل میں چھوڑ دیا

نئی دہلی: بھارت میں زیادتی کا شکار بننے کے بعد اسکول ہاسٹل میں مقیم ایک 14 سالہ طالبہ کے ہاں بچے کی پیدائش ہوئی، تاہم بچہ مر گیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت کی ریاست ادیشہ میں آٹھویں جماعت کی طالبہ کے ہاں بچے کی پیدائش ہوئی، چودہ سالہ لڑکی ایک قبائلی اسکول کے ہاسٹل میں مقیم تھی۔

پولیس نے لڑکی کے ساتھ زیادتی کے الزام میں اسکول سے ایک سینئر طالب علم کو حراست میں لیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق بچے کو تشویش ناک حالت میں قریبی اسپتال منتقل کیا گیا تھا، جہاں اسے بچایا نہیں جا سکا، تاہم طالبہ کی حالت نارمل بتائی گئی۔

ٓآٹھویں جماعت کی طالبہ نے بتایا کہ اسے بچے سمیت اسکول ہاسٹل سے نکال دیا گیا تھا، جس کے بعد وہ قریبی جنگل میں کوئی محفوظ ٹھکانا تلاش کر رہی تھی۔

طالبہ کے بیان کے بعد ادیشہ کی سرکار نے اسکول کی ہیڈ مسٹریس اور تین اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹس کو فوری طور پر معطل کر دیا، پولیس چھ دیگر اسکول ملازمین سے بھی پوچھ گچھ کر رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  انڈیا: مسلمانوں کے قتلِ عام میں ملوث 16 پولیس اہل کاروں کو 30 سال بعد سزا

پولیس کا کہنا تھا کہ اسکول سے ایک سینئر طالب علم کو بھی حراست میں لیا گیا ہے، جس پر مبینہ طور پر لڑکی کے ساتھ زیادتی کا الزام ہے۔

خیال رہے کہ بھارت میں خواتین کے ساتھ زیادتی کے واقعات انتہائی تشویش ناک حد تک بڑھ چکے ہیں، بالخصوص ریل گاڑیوں میں خواتین کی عزتیں لوٹنا ایک معمول بن چکا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں