The news is by your side.

Advertisement

ڈاکو پولیس اہلکار کا تاوان میں بٹ کوائن دینے کا مطالبہ

پونا : بھارت میں اغواء کار اب نقد رقم کے بجائے بٹ کوائن دینے کا مطالبہ کرنے لگے، گرفتاری کے خوف سے مغوی کو رہا کردیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں ایک پولیس اہلکار کو کرپٹو کرنسی کے تاجر کو اغواء کرنے اور 40 ملین ڈالر کی مالیت کے بٹ کوائن کا بطور تاوان مطالبہ کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق ایک اعلیٰ پولیس عہدیدار نے بدھ کو بتایا کہ پولیس کانسٹیبل دلیپ تکارم کو سات ساتھیوں کے ہمراہ گرفتار کیا گیا ہے۔

پولیس کانسٹیبل دلیپ تکارم نے شہر پونے کے ایک رہائشی کو اغواء کرنے کا منصوبہ بنایا تھا جس کے متعلق یہ گمان تھا کہ اس کے پاس بھاری مالیت میں کرپٹو کرنسی موجود ہے۔

کانسٹیبل اور اس کے ساتھیوں نے مبینہ طور پر 38 سالہ وینے نائک کو14 جنوری کو اغواء کیا اور اس سے مطالبہ کیا کہ وہ 40 ملین ڈالر کی مالیت کی ڈیجیٹل کرنسی سمیت8 لاکھ انڈین روپے بھی انہیں ٹرانسفر کرے۔

تاہم اغواء کاروں کو جب یہ معلوم ہوا کہ پولیس ان کا تعاقب کر رہی ہے تو انہوں نے اگلے دن ہی نائیک کو چھوڑ دیا۔ پولیس حکام نے بتایا کہ منگل کو کانسٹیبل سمیت آٹھ افراد کو حراست میں لیا ہے جو اغواء کے منصوبے میں شامل تھے۔

خیال رہے کہ فراڈ کے کیسز سامنے آنے کے بعد سال2018 میں حکومت نے کرپٹو کرنسی کے استعمال پر پابندی عائد کردی تھی تاہم دو سال بعد سپریم کورٹ نے پابندی ہٹا دی تھی۔

رواں ہفتے حکومت نے کرپٹو کرنسی سے کمائے گئے منافع پر تیس فیصد ٹیکس عائد کرنے اور مرکزی بینک کی حمایت سے "ڈیجیٹل روپیہ” متعارف کرنے کا اعلان کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں