The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں الیکشن : ووٹرز خریدنے کیلیے سات کروڑ ڈالر کے اسکینڈل کا انکشاف

نئی دہلی : بھارتی الیکشن کمیشن نے سیاست دانوں کی جانب سے ووٹوں کو خریدنے کی کوشش کو ناکام بنانے کیلئے سات کروڑ ڈالر مالیت کے تحائف قبضے میں لے لیے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں عام انتخابات قریب ہیں اس سلسلے میں بھارتی الیکشن کمیشن نے ووٹ خریدنے کے غیر قانونی عمل کی روک تھام کیلئے اہم اقدامات کیے ہیں۔

بعض سیاسی جماعتیں جو ووٹر کو خریدنے کیلئے نقد رقم اور تحائف بطور رشوت استعمال کرتی ہیں کے خلاف مہم کا آغاز کیا ہے، اس سلسلے میں سات کروڑ ڈالر کی مالیت کے تحفوں کو ضبط کر لیا گیا ہے، ضبط کی جانی والی اشیاء میں چوالیس لاکھ لیٹر شراب اور ڈیڑھ ارب روپے کا کیش بھی شامل ہے۔

اس حوالے سے برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق بھارتی الیکشن کمیشن نے تقریباً اسی مالیت کی غیر قانونی نشہ آور ادویات اور بارہ کروڑ روپے کی مالیت کے تحفوں سے لدے ہوئے ٹرکوں کو بھی قبضے میں لیا ہے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل بھی بھارت کی سیاسی جماعتوں کے امیدوار ووٹروں کو اپنی طرف راغب کرنے کے لیے موبائل فونز، ٹیلی ویژن اور الیکٹرانک آلات کو ووٹروں میں تقسیم کرتے رہے ہیں۔ عام طور پر بےاصول سیاست دان غریب شہریوں سے ووٹ خریدنے کے لیے ان تحفوں کا سہارا لیتے رہے ہیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ووٹ خریدنے کی حوصلہ شکنی کے لیے ملک میں خصوصی قوانین بنائے گئے ہیں جن کے تحت الیکشن کے اختتام تک ایک کلو گرام سونا یا چاندی اور دس لاکھ روپے سے زیادہ کیش لے کر چلنے پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں