The news is by your side.

Advertisement

بھارتی کسان کی خودکشی، بی جے پی کو ووٹ نہ دینے کی وصیت

نئی دہلی: بھارت کی ریاست اترکھنڈ کے گاؤں میں کسان نے خودکشی کرلی، اُس نے اپنے الوداعی پیغام میں سب کو تلقین کی کہ وہ بی جے پی کو ووٹ نہ دیں۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست اتر کھنڈ کے ضلع ہردوار کے گاؤں دادکی میں 65 سالہ ایشو چند شرما نامی بزرگ کسان نے زہر پی کر خودکشی کی۔ خودکشی کرنے والے کسان نے زہر خوانی سے قبل ایک پیغام تحریر کیا جس میں اُس نے لکھا کہ ’بھارتیہ جنتا پارٹی نے پانچ سال میں کسانوں کو تباہ کردیا، ہمارے معاملات حل ہونے کے بجائے اور خراب ہوئے لہذا میرے دوستوں اور عزیزوں ایسی جماعت کو ووٹ نہیں دینا ورنہ آنے والے سالوں میں حکومت ہر شخص کو چائے پینے پر مجبور کردے گی‘۔

مزید پڑھیں: بھارت: 50 ہزار سے زائد کسان سڑکوں پر نکل آئے، لانگ مارچ کا آغاز

ایشو چند شرمانے الزام عائد کیا کہ انہوں نے ایک شخص کی مدد سے بینک سے 5 لاکھ روپے قرض لیا تھا، اب وہی شخص بینک عملے کے ساتھ مل کر انہیں ذہنی تشدد کررہا ہے جس کے باعث وہ اپنی زندگی کا خاتمہ کررہے ہیں۔ کسان نے لکھا کہ میں نے بینک کو جس وقت قرض کے لیے درخواست دی تو ایک شخص کی ضمانت درکار تھی، میں نے اُس شخص کو اپنا دستخط شدہ خالی چیک بھی دیا تھا، بینک کو رقم واپس کرنے کے بعد اُس شخص نے چیک استعمال کیا اور اکاؤنٹ میں جمع ہونے والی فصل کی آمدنی نکالنے کی دھمکی بھی دی۔

دوسری جانب پولیس نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ وہ ایشو چند شرمان کے آخری پیغام کی تحقیقات کررہی ہے اور تصدیق کے بعد ہی اس حوالے سے کچھ کیا جاسکتا ہے۔ پولیس افسر لکسرور یندرا سنگھ کا کہنا تھا کہ ’ابتدائی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ خودکشی کرنے والے کسان نے ایک شخص کی مدد سے بینک سے پانچ لاکھ روپے کی رقم بطور قرض حاصل کی، وہ شخص چار لاکھ روپے کا مطالبہ کررہا تھا‘۔

یہ بھی پڑھیں: بھارت: ہزاروں کسان مودی حکومت کے مظالم سے تنگ، برہنہ احتجاج کی دھمکی

پولیس حکام کا کہنا تھا کہ ابھی ہم اس بات کی تحقیقات کررہے ہیں کہ آیا یہ پیغام ایشو چند شرما نے ہی لکھا ہے یا نہیں، اگر اُس نے ہی لکھا ہوا تو مذکورہ شخص اور بینک کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں