The news is by your side.

Advertisement

بابری مسجد کیس: بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے سے بھارتی مسلمان غیر مطمئن

حیدرآباد: مسلمانوں کی تاریخی عبادت گاہ بابری مسجد کیس پر بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے پر بھارتی مسلمانوں نے عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی مسلمان بابری مسجد کیس کے فیصلے پر غیر مطمئن ہیں، بھارتی مسلم رہنما اسدالدین اویسی نے کہا سپریم کورٹ سپریم ہے لیکن بے عیب نہیں، اس کے فیصلے سے مطمئن نہیں ہیں۔

بھارتی مسلم رہنما کا کہنا تھا کہ ہم اپنے حق کی لڑائی لڑ رہے تھے، ہمیں 5 ایکڑ زمین کی خیرات کی ضرورت نہیں، مسلمانوں کو 5 ایکڑ زمین کا فیصلہ مسترد کر دینا چاہیے۔

ادھر آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ نے بابری مسجد کیس کے فیصلے پر رد عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ مسجد برائے فروخت نہیں، فیصلہ انصاف پر مبنی نہیں ہے، اس کے بدلے سو ایکڑ زمیں بھی دیں گے تو قبول نہیں۔

تازہ ترین:   بابری مسجد کی جگہ مندر بنے گا، بھارتی سپریم کورٹ کا فیصلہ

وکلا نے کہا فیصلہ تاریخی حقائق کا غلط حساب کتاب ہے، مسجد کی تعمیر کو تو تسلیم کیا گیا لیکن زمین ہندوؤں کو دے دی گئی، فیصلے پر نظر ثانی کی درخواست دیں گے۔

واضح رہے کہ بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد کی متنازع زمین ہندوؤں کو دینے کا فیصلہ سناتے ہوئے کہا ہے بھارتی حکومت کی زیر نگرانی بابری مسجد کی جگہ مندر بنے گا اور مسلمانوں کو ایودھیا میں متبادل جگہ دی جائے۔

بھارتی سپریم کورٹ میں چیف جسٹس رنجن گوگئی کی سربراہی میں 5 رکنی بینچ نے بابری مسجد کیس کا فیصلہ سنا دیا، فیصلے میں سنی اور شیعہ وقف بورڈز کی درخواستیں مسترد کر دی گئیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں