The news is by your side.

Advertisement

ندی میں خودکشی کرنے والی عائشہ کا شوہر سامنے آگیا

نئی دہلی: بھارت میں سسرال والوں کے طعنوں سے تنگ آکر ندی میں کود کر خودکشی کرنے والی لڑکی عائشہ کا شوہر سامنے آگیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق احمد آباد سے تعلق رکھنے والی 23 سالہ عائشہ نے سسرال والوں کے طعنوں سے تنگ آکر ندی میں کود کر خودکشی کرلی تھی، گجرات پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے راجستھان کے پالی علاقے سے عائشہ کے شوہر عارف خان کو گرفتار کرلیا۔

بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ پولیس عارف خان سے تفتیش کررہی ہے، اس معاملے میں مزید انکشافات متوقع ہیں۔

عائشہ کے شوہر عارف پر الزام ہے کہ شادی کے بعد وہ بیوی کو جہیز کے لیے تشدد کا نشانہ بناتا تھا اور اس کے گھر والوں کی جانب سے بھی عائشہ کو جہیز کے لیے طعنے دئیے جاتے تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ عائشہ کا شوہر عارف خان اپنے والد بابو خان کے ساتھ گرینائٹ فیکٹری جالور میں کام کرتا ہے اس کے علاوہ وہ دکان بھی چلاتا ہے اس نے اپنی دو دکانیں کرائے پر لی تھیں اور خود فیکٹری میں سپروائزر کے عہدے پر کام کرتا تھا، ملزم کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا اور ریمانڈ حاصل کرلیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: ندی میں کود کر خودکشی کرنیوالی عائشہ کی ایک اور ویڈیو منظرعام پر آگئی

دوسری جانب عائشہ کے ماموں کا کہنا تھا کہ اس کے سسرال والے جہیز کے لالچ کی وجہ سے اسے باقاعدگی سے تشدد کا نشانہ بناتے تھے جس سے وہ تنگ آکر خودکشی جیسا اقدام اٹھایا۔

واضح رہے کہ گجرات کی عائشہ نے حال ہی میں احمد آباد کی سابرمتی ندی میں کود کو اپنی جان دے دی تھی، خودکشی سے پہلے عائشہ نے ایک ویڈیو بیان دیا تھا جو وائرل ہوگیا تھا، جس پر سوشل میڈیا پر شدید غم و غصے کی لہر دوڑ گئی تھی۔

یاد رہے کہ عائشہ نے آخری ویڈیوسابرمتی ندی پر ہی بنائی اور اس نے کہا ۔ میں جو بھی کر رہی ہوں، میں اپنی مرضی سے کر رہی ہوں، عائشہ کا مزید کہنا تھا کہ اب کیا کہوں، خدا کی عطا کردہ زندگی بس اتنی ہی تھی۔ ابا کب تک لڑو گے ، اب کیس واپس لے لو۔

عائشہ کا مزید کہنا تھا کہ اگر عارف آزادی چاہتا ہے تو اسے آزاد ی دیں گے، میں نے جس کو جو بتانا چاہیے میں نے اسے بتادیا، میر ے کچھ سوال تھے مجھے آج اسکے جواب مل گئے، میں اب مزید جینا نہیں چاہتی۔۔

Comments

یہ بھی پڑھیں