The news is by your side.

Advertisement

ایک اور ملک نے بچوں کے لیے سائنوویک ویکسین کی سفارش کر دی

جکارتہ: انڈونیشیا کے فوڈ اینڈ ڈرگ ایجنسی نے 12 سال سے 17 سال کے بچوں کو چین کی تیار کردہ کرونا ویکسین سائنوویک لگانے کی سفارش کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق انڈونیشیا کے کو وِڈ 19 ٹاسک فورس نے پیر کو کہا ہے کہ حکام وبا میں تیزی آنے کے سبب ویکسینیشن پروگرام کو وسعت دے رہے ہیں، اس سلسلے میں فوڈ اینڈ ڈرگ ایجنسی نے سفارش کی ہے کہ بارہ سے سترہ سال والے شہریوں کو سائنوویک بائیوٹیک کی تیار کر دہ کرونا ویکسین لگائی جائے۔

تاہم کرونا ٹاسک فورس کے ترجمان نے اس حوالے سے کچھ نہیں بتایا کہ اس پر عمل کب سے شروع ہوگا، جب کہ ملک میں کرونا کیسز میں تیزی دیکھی جا رہی ہے۔

خیال رہے کہ 94 ملین ڈوزز ملنے کے بعد انڈونیشیا اپنے ویکسینیشن پروگرام کا بڑا حصہ سائنوویک ویکسین کے ذریعے ہی چلا رہا ہے، اس کے علاوہ انڈونیشیا کو آسٹرازینیکا اور سائنوفارم ویکسینز کے بھی 10 ملین ڈوز مل چکی ہیں۔

کرونا ٹاسک فورس کے ڈیٹا کے مطابق انڈونیشیا میں کرونا وائرس انفیکشن کے مجموعی کیسز میں 18 سال تک کے بچوں کی شرح 12.6 فی صد ہے۔

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) رواں ماہ ہی سائنوویک ویکسین کو ایمرجنسی استعمال کے لیے منظور کر چکا ہے، ادارے کا کہنا تھا کہ نتائج میں دیکھا گیا کہ اس ویکسین نے 51 فی صد وصول کنندگان میں علاماتی کرونا وائرس انفیکشن کو روکا، اور اس نے شدید کرونا انفیکشن اور اسپتال داخلوں کو بھی روکا۔

انڈونیشیا میں سرکاری رپورٹ کے مطابق صرف ہفتے کے دن 13 لاکھ ویکسین ڈوز دی گئی تھیں، اور یہ جنوری سے شروع ہونے والے پروگرام کے بعد کسی ایک دن سب سے زیادہ دیے جانے والے ڈوز تھے۔

ڈیٹا کے مطابق اب تک انڈونیشیا میں 1 کروڑ 38 لاکھ افراد کرونا ویکسین کے دونوں ڈوز لے چکے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں