سندھ طاس معاہدہ: پاک بھارت کمشنرز کا اجلاس پاکستان میں شروع -
The news is by your side.

Advertisement

سندھ طاس معاہدہ: پاک بھارت کمشنرز کا اجلاس پاکستان میں شروع

اسلام آباد: پانی کے تنازعات پرپاک بھارت سندھ طاس واٹرکمشنرزکا پہلا با ضابطہ اجلاس کا آغاز ہوگیا ہے، مذاکرات میں سیلاب کی پیشگی اطلاع کے حوالے سے متعلق امور پربھی بات چیت ہوگی، بھارت کی جانب سے متنازع ڈیموں کی تعمیر کو ایجنڈے میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آبی تنازعات پرپاک بھارت سندھ طاس واٹرکمشنرزکا پہلا با ضابطہ اجلاس شروع ہوگیا ہے، پاکستان اوربھارت کےدرمیان مذاکرات کا یہ سلسلہ 2 روز تک جاری رہیں گے، جبکہ مذاکرات میں پاکستانی وفد کی قیادت انڈس واٹرکمشنر مرزا آصف سعید بات کر رہےہیں، جبکہ بھارتی وفد کی قیادت سندھ طاس واٹر کمشنر پی کے سکسینا کررہے ہیں.

امکان کیا جارہا ہے کہ مذاکرات کے اس سلسلے میں بھارت سے پن بجلی کے 4 منصوبوں کی تعمیر پر بات چیت کی جا رہی ہے، اس کے علاوہ آبی مسائل کے حل کے لئے ثالث کی تعیناتی پر بھی بات کا چیت کا بھی امکان جبکہ دریاؤں میں پانی کی صورتحال اور اعداد و شمارکے تبادلے جیسے امور بھی زیرغورآئیں گے.

سیلاب کی پیشگی اطلاع کے حوالے سے متعلق امور پربھی بات چیت ہوگی، ایجنڈے پر اتفاق ہونے کی صورت میں اعلامیہ بھی جاری کیا جاسکتا ہے، واضح رہے کہ بھارت کی جانب سے متنازع ڈیموں کی تعمیر کو ایجنڈے میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ گذشتہ سال ستمبر میں بھارت کے اڑی فوجی اڈے پر عسکریت پسندوں نے حملے کیا ، جیسے بھارتی حکام اور میڈیا نے ہمیشہ کی طرح پاکستان کے سر پر ذالنے کی ناکام کوشش کی، بھارت نے سندھ طاس معاہدے کو منسوخ کرنے پر غور کیا تھا، واضح رہے اس معاہدے میں ثالث کا کردار عالمی بینک نے ادا کیا تھا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں