The news is by your side.

Advertisement

روس میں مہنگائی میں کمی آنے لگی

ماسکو: روسی وزیر خزانہ نے کہا ہے کہ ملک میں مہنگائی میں بتدریج کمی آنے لگی ہے۔

تفصیلات کے مطابق روسی وزیر خزانہ انتون سلوانوف نے کہا ہے کہ امریکی اور یورپی پابندیوں کے باوجود روس میں مہنگائی کی شرح بتدریج کم ہو رہی ہے کیوں کہ مالیاتی منڈیوں کی صورت حال مستحکم ہونے لگی ہے۔

معیشت کے حوالے سے حکومتی کمیشن کے اجلاس میں انھوں نے کہا کہ مالیاتی منڈیوں میں استحکام کی بدولت افراط زر کی شرح بتدریج کم ہو رہی ہے، طویل مدتی فیڈرل لون بانڈ کی شرحیں کم ہو کر 10.5 فی صد ہو گئی ہیں، ہمیں توقع ہے کہ یہ انڈیکیٹر گرتا رہے گا کیوں کہ مہنگائی کم ہوتی جائے گی۔

سلوانوف نے زور دیا کہ بینک آف روس نے افراط زر کے خطرات پیدا کیے بغیر شرح سود کو کم کرنا شروع کر دیا ہے، افراط زر کی مزید سست روی سے معیشت میں شرح سود میں کمی اور اس کے نتیجے میں، کاروباری سرگرمیوں کی توسیع کے لیے قرضوں کی استطاعت میں بھی مدد ملے گی۔

اقتصادی ترقی کے وزیر میکسم ریشیٹنیکوف نے کہا کہ روسی معیشت نے اپنے خلاف لگائی گئی پابندیوں کا پہلا جھٹکا برداشت کر لیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ معیشت کو پہلی بار پابندی کا سامنا کرنا پڑا، ہمیں پیداواری چَینز، لاجسٹکس کی تنظیم نو کرنے اور معیشت میں ساختی تبدیلیاں کرنے کے لیے وقت درکار ہے، یہ بڑی حد تک حکومت اور بینک آف روس کی طرف سے فوری طور پر اٹھائے گئے اور نافذ کیے گئے اقدامات کا نتیجہ ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں