The news is by your side.

Advertisement

ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں امریکا کی مدد کس نے کی ؟نام سامنے آگئے

تہران : عراق اور شام کے مخبروں کا ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں امریکا کی مدد کاانکشاف سامنے آیا ، عراقی تفتیش کار کا کہنا ہے کہ بغداد ائیرپورٹ پر جاسوسوں نے سلیمانی کی آمد سے متعلق امریکا کو آگاہ کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق برطانوی خبر رساں ایجنسی نے اپنی خصوصی رپورٹ میں دعویٰ کیا ہے کہ ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد تفتیش کاروں کی تحقیقات کا مرکز یہ نکتہ تھا کہ امریکا کو سلیمانی کی پوزیشن کا پتہ کیسے چلا اور کیا یہ معلومات دمشق اور بغداد ائیرپورٹ پر موجود مخبروں نے امریکا تک پہنچائی جن کی مدد سے امریکا جنرل سلیمانی کو مارنے میں کامیاب رہا؟

عراقی تفتیش کاروں نے اس سلسلے میں بغداد ائیرپورٹ کے ملازمین، پولیس افسران اور شام ونگز کے ملازمین سے تفتیش کی، تحقیقات فالح الفیاض کی سربراہی میں کی گئیں جو کہ عراق کے قومی سلامتی کے مشیر ہیں اور ساتھ ہی وہ عراق کی سرکاری ملیشیا تنظیم الحشد الشعبی کے سربراہ بھی ہیں۔

سیکیورٹی حکام نے بتایا کہ عراق کی نیشنل سیکیورٹی ایجنسی کے تفتیش کاروں کو اس بات کے مضبوط اشارے ملے ہیں کہ بغداد ائیرپورٹ پر عراق اور شام کے جاسوسوں کے نیٹ ورک نے حساس سیکیورٹی معلومات اور جنرل سلیمانی کی آمد سے متعلق امریکا کو آگاہ کیا۔

دوسری جانب امریکی محکمہ خارجہ نے بتانے سے معذرت کی کہ عراق اور شام میں موجود مخبروں نے سلیمانی کی ہلاکت میں کوئی کردار ادا کیا یا نہیں۔

البتہ امریکی حکام نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ امریکا اس حملے سے کئی روز پہلے سے سلیمانی کی نقل و حرکت پر نظر رکھ رہا تھا تاہم انہوں نے یہ بتانے سے گریز کیا کہ حملے کی شب امریکا کو سلیمانی کی موجودگی کے مقام کا علم کیسے ہوا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں