جے آئی ٹی کے ساتھ تعاون نہ کرنے کا تاثر درست نہیں، مشیرِ اطلاعات سندھ -
The news is by your side.

Advertisement

جے آئی ٹی کے ساتھ تعاون نہ کرنے کا تاثر درست نہیں، مشیرِ اطلاعات سندھ

کراچی: مشیرِ اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کے ساتھ تعاون نہ کرنے کا تاثر قطعی درست نہیں، سندھ حکومت ایف آئی اے کی جے آئی ٹی سے تعاون کر رہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق مشیرِ اطلاعات، قانون و اینٹی کرپشن سندھ نے جے آئی ٹی کو ریکارڈ فراہمی کے معاملے پر وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت کو باقی معلومات اکٹھا کر کے جے آئی ٹی کو دینے کا کہا ہے۔

دس سالہ ریکارڈ جمع کرنے میں وقت درکار ہوتا ہے: مرتضیٰ وہاب

انھوں نے کہا کہ جے آئی ٹی کے ساتھ تعاون نہ کرنے کا تاثر قطعی درست نہیں، جے آئی ٹی نے جو ریکارڈ مانگا وہ فراہم کیا گیا ہے، بعض محکموں کا 10 سالہ مانگا گیا ریکارڈ مرتب کر کے جلد فراہم کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ جعلی بینک اکاؤنٹس کی تحقیقات کے لیے بنائی گئی جے ائی ٹی کے سربراہ احسان غنی نے گزشتہ روز سپریم کورٹ کو بتایا کہ سیکٹری توانائی کیس کی تحقیقات میں جے آئی ٹی کے ساتھ تعاون نہیں کر رہے۔

مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ دس سالہ ریکارڈ کو جمع کرنے میں وقت درکار ہوتا ہے، سندھ حکومت نے جے آئی ٹی کو ریکارڈ فراہمی میں تاخیر سے کام نہیں لیا۔

کراچی میں  پانی کا مسئلہ

دریں اثنا مرتضیٰ وہاب نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت کا مؤقف ہے کہ 1991 کے معاہدے کے تحت پانی نہیں مل رہا، سندھ کو معاہدے کے تحت پانی کی فراہمی ممکن بنانے کی درخواست کرتا ہوں، کراچی کو 1200 کیوسک اضافی پانی ملنا چاہیے۔


یہ بھی پڑھیں:  صوبائی حکومتیں غیر قانونی ہائیڈرنٹس کے خلاف کارروائی میں تعاون کریں، چیف جسٹس


انھوں نے کہا کہ سندھ حکومت نے 2 سال پہلے کراچی کو اضافی پانی دینے کے لیے معاملہ اٹھایا تھا، خوش قسمتی ہے کہ آبی ذخائر کا چارج فیصل واوڈا کے پاس ہے وہ ہماری مدد کریں۔

مشیرِ اطلاعات سندھ نے کہا کہ الزامات سے کچھ حاصل نہیں ہوگا کام کر کے دکھانا پڑے گا، وفاق کے پاس چیئرمین واٹر بورڈ کے خلاف ثبوت ہیں تو عدالت لے کرجائیں، چوری کون کر رہا ہے اس کا فیصلہ عدالتیں کریں گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں