The news is by your side.

Advertisement

طیارہ حادثے کی تحقیقاتی رپورٹ ایک ماہ میں اسمبلی میں پیش کی جائے گی، غلام سرور

اسلام آباد : وزیر ہوا بازی غلام سرور خان نے اراکین اسمبلی کو طیارہ حادثے سے متعلق بتایا کہ حادثے کے ایک ماہ کے اندر آزاد اور منصفانہ انکوائری رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش کی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر برائے ہوا بازی غلام سرور خان نے کراچی ایئرپورٹ کے قریب رہائشی آبادی میں پیش آنے والے پی آئی اے طیارہ حادثہ کے بارے میں قومی اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پاکستان نے وفات پانے والوں کے لواحقین کو 10 لاکھ روپے معاوضہ کے طور پر ادا کئے گئے ہیں۔

غلام سرور خان کا کہنا تھا کہ 95 میتیں لواحقین کے حوالے کی جا چکی ہیں. وفاقی وزیر نے کہا کہ زمین پر تباہ شدہ مکانات کا جائزہ لینے کے لئے سی اے اے اور پی آئی اے سروے کررہے ہیں۔ زمین پر ، ایک بچہ فوت ہوا اور دو زخمی ہوئے جن کی تلافی بھی کی گئی ہے۔

انہوں نے کراچی کے عوام کے جذبے کو سراہا جنہوں نے طیارے حادثے میں بے لوث ہو کر لوگوں کی خدمت کی۔

وزیر برائے ہوا بازی نے کہا کہ یہ موجودہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ یہ معلوم کریں کہ پاکستانی عوام کو اکثر ایسے سانحات کیوں برداشت کرنا پڑتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حادثے کے ایک ماہ کے اندر آزاد اور منصفانہ انکوائری رپورٹ قومی اسمبلی میں پیش کی جائے گی ، اس میں ماضی قریب میں ہونے والے حادثوں کی اطلاعات بھی شامل ہیں۔

غلام سرور خان نے قومی اسمبلی میں اپوزیشن کی طرف سے اٹھائے گئے 7 سوالات کا خیرمقدم کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ وہ ایک آٹھواں سوال شامل کرنا چاہتے ہیں جس میں خدمت کرنے والے پائلٹوں کے دماغی اور جسمانی ٹیسٹ پر توجہ دی گئی ہے۔

وفاقی وزیر نے اراکین اسمبلی کو بتایا کہ سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ پی آئی اے کے پائلٹوں اور تکنیکی گراؤنڈ ہینڈلرز کی ڈگریوں کی تصدیق کی جائے، پتہ چلا کہ جعلی ڈگریوں والے پی آئی اے کے تقریبا 550 ملازمین موجود ہیں۔

غلام سرور خان نے کہا کہ تحقیقات کے عمل کو مزید شفاف اور قابل اعتبار بنانے کے لیے  “انٹرنیشنل فیڈریشن آف ایئر لائن پائلٹس’ ایسوسی ایشن “ سے درخواست کی ہے کہ وہ ایک پائلٹ اور ایک تکنیکی ماہر  فراہم کرے۔

یاد رہے کہ جمعۃ الوداع کے روز کراچی ایئرپورٹ کے قریب واقع رہائشی آبادی جناح گارڈن میں پی آئی اے کا مسافر بردار طیارہ حادثے کا شکار ہوگیا تھا جس کے نتیجے میں جہاز میں سوار تمام مسافر جاں بحق ہوگئے تھے تاہم دو افراد معجزانہ طور پر زندہ بچنے میں کامیاب رہے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں