The news is by your side.

Advertisement

ملا منصور کی ہلاکت امریکہ و ایران کی مشترکہ کاروائی ہے،گلبدین حکمت یار

کابل: افغانستان کی معروف جہادی تنظیم حزب اسلامی کے سربراہ افغانستان گلبدین حکمت یار نے ملا اختر منصور کی ہلاکت کو امریکہ اور ایران کی مشترکہ کاروائی کا نتیجہ قرار دے دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ملا اختر منصور کی ڈرون حملے کے بعد افغانستان کی کسی جہادی تنظیم کے سربراہ کی طرف سے پہلا مذمتی بیان سامنے آگیا ہے،تنظیم حزبِ اسلامی کے سربراہ اور اور سابقہ وزیرِ اعظم گلبدین حکمت یار کا کہنا تھا کہ ملا منصور اختر کو ایرانی خفیہ ایجینسی کی اطلاع پر ڈرون حملے کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

Rahimullah-Mullah-Mansoor

افغان مجاہدین کے رہنما گلبدین حکمت یار نے الزام عائد کیا کہ ایران کی حکومت نے ملا اختر منصور کی نقل و حرکت سے امریکہ کو آگاہ کیا، جیسے ہی ملا اختر منصور ایران سے پاکستان میں داخل ہوئے،ایران کی خفیہ ایجینسی نے امریکہ کو اطلاع دے دی اور عین اسی وقت ڈرون نے افغانستان سے پرواز بھرکرنوشکی کے مقام پر ملا اختر منصور کو نشانہ بنا کر قتل کر دیا۔


طالبان رہنما ملا منصور کی ہلاکت کی تصدیق 


انہوں نے ملا اختر منصور کی ہلاکت پر غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملا اختر منصور کی ہلاکت ناقابلِ تلافی نقصان ہے،جس کا خمیازہ ایران کو بھگتنا پڑے گا۔

Mulla

یاد رہے افغان طالبان کے مقتول امیر ملا اختر منصور کو چند روز قبل امریکی ڈرون طیارے نے نوشکی کے مقام پر اس وقت نشانہ بنایا جب وہ ایران سے پاکستان آرہے تھے ملا منصور محمد ولی کے نام سے جعلی دستاویزات پر کئی بار پاکستان سے بیرون ملک سفر کیا تھا، ایران کا بہ راستہ سڑک یہ سفر ان کا آخری سفر ثابت ہوا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں