The news is by your side.

Advertisement

عراقی حکومت کے خلاف احتجاج، بزرگ تاجر دوران نشریات دوران دم توڑ گیا

بغداد: عراق کے ایک بزرگ شہری حکومت کے سامنے اپنا احتجاج ریکارڈ کرواتے ہوئے براہ راست نشریات کے دوران دم توڑ گئے۔

بین الاقوامی میڈیا رپورٹ کے مطابق   عراقی حکومت کیخلاف ہونے والے احتجاج کے موقع پر ایک بزرگ شہری کے پاس میڈیا کا نمائندہ پہنچا جو براہ راست انٹرویو کررہا تھا۔

شہری نے کہا کہ ’یہاں ملازمتیں ویسی نہیں ہیں اور حکومت نے میری دکان بھی سیل کردی، ہمیں کس طرح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور عوام کتنی پریشان ہے، اس بات کا کسی کو اندازہ نہیں ہے‘۔

یہ الفاظ بطور احتجاج ریکارڈ کرانے کے بعد وہ شخص وہیں گر گیا جس کے بعد اُسے اسپتال منتقل کیا جارہا تھا تو اس نے راستے میں ہی دم توڑ دیا۔ میڈیکل رپورٹ کے مطابق رپورٹر سے بات کرنے کے دوران شہری کو ہارٹ اٹیک ہوا جو اُس کی موت کی وجہ بنا۔

رپورٹ کےمطابق عراقی حکومت نے ملک میں جاری مظاہروں کے پیش نظر   تمام دکانوں کو بلوائیوں سے محفوظ رکھنے کے لیے  سیل کردیا تھا۔

بزرگ شہری نے اپنے آخری انٹرویو میں حکومت پر شدید تنقید کی اور کہا کہ اگر مظاہرین کو قابو نہیں کیا جاسکتا تو حکمران اپنا عہدہ چھوڑ دیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں