اثاثہ جات ریفرنس کیس ، عدم حاضری پر اسحاق ڈار کے 50لاکھ کے مچلکےضبط ہونےکاامکان
The news is by your side.

Advertisement

اسحاق ڈار مفرور ملزم قرار، اشتہاری قراردینے کی کارروائی شروع کرنےکاحکم

اسلام آباد : اثاثہ جات ریفرنس کیس میں اسحاق ڈار کو مفرور ملزم قرار دیتے ہوئے ان کیخلاف اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنےکاحکم دیدیا ،جبکہ اسحاق ڈار کے نمائندے مقرر کرنے کی درخواست خارج کردی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کر رہے ہیں، اسحاق ڈاراحتساب عدالت میں پیش نہ ہوسکے جبکہ استغاثہ کے گواہ اورنیب پراسیکیوٹر عدالت میں پیش ہوئے۔

اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت اسحاق ڈار کے وکیل کی عدم موجودگی کے باعث ساڑھے 9 بجے تک کیلئے ملتوی کر دی گئی تھی۔

نیب کی اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنے کا حکم

اسلام آباد کی احتساب عدالت نے اثاثہ جات ریفرنس میں مسلسل عدم حاضری پر اسحاق ڈار کو مفرور ملزم قرار دے دیا اور وزیرخزانہ کو اشتہاری قرار دینے کی کاروائی شروع کرنے کا حکم دیا اور کہا کہ اخبار کے ذریعے اشتہار جاری کئے جائیں جبکہ  اسحاق ڈار کے ضامن کو شوکاز نوٹس بھی جاری کر دیئے۔

نیب پراسیکیوٹر نے اپنے دلائل میں کہا کہ اسحاق ڈار کی میڈیکل رپورٹ کی بر طانوی قوانین سے مطابقت نہیں ، پہلی رپورٹ میں کچھ بتاتے اوردوسری رپورٹ میں کچھ بتایاجاتاہے، میڈیکل رپورٹ کی تصدیق کےلیے وزارت خارجہ سےبات کی ہے۔

نیب نے عدالت سے استدعا کی کہ اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کی جائے۔

 ریحان بشیر کو اسحاق ڈارکا نمائندہ مقرر کرنے کی درخواست مسترد

عدالت نے اسحاق ڈار کی غیر حاضری میں ریحان بشیر کو نمائندہ مقرر کرنے کی درخواست بھی مسترد کردی۔

اسحاق ڈار کے وکیل نے ریحان بشیر کو اپنا نمائندہ مقرر کرنے کی درخواست کی، جس پر عدالت نے فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

دوران سماعت اسحاق ڈار کے ناقابل ضمانت وارنٹ کی تعمیلی رپورٹ بھی عدالت میں پیش کی گئی،  جس کے مطابق نیب نے وزیر خزانہ کی لاہور اور اسلام آباد میں رہائشگاہوں پرچھاپے مارے لیکن ملزم اہلخانہ کے ہمراہ بیرون ملک فرار ہو چکا ہے۔

نیب تفتیشی افسر نے کہا کہ  لاہور7گلبرگ میں ملزم کی رہائشگاہ پروارنٹ دیئےجاچکے، ان کی رہائشگاہ پر مالی نے وارنٹ وصول کئے ہیں۔

جج نے استفسار کیا کہ  مالی کو کیسے وارنٹ دیئے ہیں، جس پر تفتیشی افسر نے کہا کہ  مالی کے مطابق ملزم لاہور والے گھر میں ڈھائی سال سے نہیں گیا۔

وکیل اسحاق ڈار حسین مفتی کا اپنے دلائل میں کہنا تھا کہ مؤکل کوڈاکٹر نےسفر سےمنع کیا ہے ،27 نومبر کو اسحاق ڈار کا چیک اپ ہوگا۔

اسحاق ڈار کی تیسری نئی میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش

اثاثہ جات ریفرنس کیس میں کی سماعت میں اسحاق ڈار کی تیسری نئی میڈیکل رپورٹ عدالت میں پیش کردی گئی، میڈیکل رپورٹ میں کہا گیا کہ اسحاق ڈارکی دل کی ایک شریان درست کام نہیں کر رہی، اسحاق ڈار کو27نومبر کودوبارہ طبی معائنےکےلیےبلایاگیاہے۔

دوران سماعت اسحاق ڈار کے وکیل نے ایک بار پھر میڈیکل کی بنیاد پر حاضری سے استثنٰی دینے کی درخواست کی جبکہ مقدمے کا ٹرائل اٹارنی کے ذریعے آگے بڑھانے کی استدعا کی۔ نیب نے اسحاق ڈار کی دونوں درخواستوں کی مخالفت کی۔

اسحاق ڈاکی اشتہار سے متعلق نیب رپورٹ چار دسمبر تک طلب کرلی گئی جبکہ  احتساب عدالت نے اسحاق ڈار کے ضامن کو شوکاز نوٹس جاری کیا اور 24 نومبر تک جواب جمع  کرانے کا حکم دے دیا ہے۔


مزید پڑھیں : عدم حاضری پر اسحٰق ڈار کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری


احتساب عدالت نے گزشتہ سماعت پر وزیرخزانہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے تھے۔

ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے جانے کے بعد چیئرمین نیب نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کی منظوری دی تھی، جس کے بعد وزارتِ داخلہ کو خط لکھ دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ آمدن سےزائد اثاثہ جات ریفرنس میں احتساب عدالت کی جانب سے اسحاق ڈار پر فرد جرم عائد کی جاچکی ہے تاہم اسحٰق ڈار نے صحت جرم سے انکار کردیا تھا۔


مزید پڑھیں : وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد


واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل نیب کی سربراہی میں نیب پراسیکیوشن ونگ نے سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں ، داماد اور اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنسزدائرکیے تھے۔قومی احتساب بیورو کی ٹیم نے شریف خاندان کے خلاف 3 اور وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف 1 ریفرنس دائر کیا تھا۔

وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف سیکشن 14 سی لگائی گئی ہے ‘جو آمدن سے زائد اثاثے رکھنے سے متعلق ہے۔ نیب کی دفعہ 14 سی کی سزا 14 سال مقرر ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں