site
stats
اہم ترین

مذموم مقاصد کے لیے دین کو یرغمال بنا لیا گیا ہے: وزیر اعظم

لاہور: وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کا کہنا ہے کہ معاشرے میں دہشت گردوں کے سہولت کار موجود ہیں۔ ریاست ایسے لوگوں کا کھوج لگا رہی ہے اور جلد وہ اپنے انجام کو پہنچیں گے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں جامعہ نعیمیہ میں وزیر اعظم نواز شریف نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا میں اسلام جیسے دین امن کے نام پر ظلم کا بازار گرم ہے۔ لوگوں نے اپنے مذموم مقاصد کے لیے دین کو یرغمال بنا رکھا ہے۔

نواز شریف نے کہا کہ جامعہ نعیمیہ کے دروازے دیگر مذاہب کے لوگوں کے لیے بھی کھلے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کیا جامعہ نعیمیہ میں خون کی ہولی کھیلنے والے انسان ہوسکتے ہیں۔

وزیر اعظم نے دہشت گردوں کے خلاف فتوے جاری کرنے والے علما کو سلام پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ علما نے جان ہتھیلی پر رکھ کر ایسے لوگوں کے خلاف فتوے دیے۔ دہشت گردی کی بنیادیں انتہا پسندی میں ہیں جبکہ دہشت گردی کا خاتمہ علما کے کردار کے بغیر ممکن نہیں ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گردوں نے جہاد جیسے پاکیزہ تصور کو مسخ کیا۔ ہمیں لوگوں کو اصل دین سے آگاہ کرنا ہے۔ دہشت گردی کے خاتمے کے لیے بیانیہ محراب اور منبر سے آنا چاہیئے۔

وزیر اعظم کی جامعہ نعیمیہ آمد پر تمام ملحقہ سڑکوں کو بند کر دیا گیا جبکہ علاقے میں موجود مارکیٹیں اور دکانیں بھی بند کروا دی گئی تھیں۔ وزیر اعظم کی آمد کے بعد متعدد طلبا کو جامعہ کے اندر جانے سے روک دیا گیا جس پر طلبا نے مشتعل ہو کر گو نواز گو کے نعرے لگائے۔

جامعہ نعیمیہ میں تقریب کے بعد وزیر اعظم نے آئی جی آفس میں پنجاب پولیس کے ڈیجیٹل سسٹم کا افتتاح کیا۔ تقریب میں وزیر اعلیٰ پنجاب، اعلیٰ پولیس حکام اور دیگر سیاسی اور سماجی شخصیات موجود تھیں۔

مزید پڑھیں: وزیر اعظم کا ٹھٹھہ اور سجاول کے لیے متعدد ترقیاتی منصوبوں کا اعلان

یاد رہے کہ دو روز قبل وزیر اعظم نواز شریف نے ٹھٹھہ کا دورہ کیا تھا جہاں انہوں نے ضلع ٹھٹھہ اور سجاول کو گیس دینے کا اعلان کرنے ساتھ ساتھ ٹھٹھہ کے لیے 500 بستروں کے اسپتال کے قیام کا اعلان بھی کیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top