The news is by your side.

اسرائیلی فورسز کی فائرنگ سے 11 برس قید کے بعد رہا ہونے والے فلسطینی سمیت 4 شہید

جنین: اسرائیلی فورسز نے فائرنگ کر کے مزید 3 فلسطینیوں کو آج صبح بے دردی سے شہید کر دیا، قابض بے رحم فورسز نے ایک ایسے فلسطینی کو بھی شہید کیا جو 11 برس قید کاٹ کر پچھلے برس ہی رہا ہو گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق فلسطینی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ اسرائیلی فورسز نے مقبوضہ مغربی کنارے کے شہر جنین پناہ گزین کیمپ میں آج صبح چھاپے کے دوران تین فلسطینیوں کو گولیاں مار کر شہید کر دیا ہے۔

مقبوضہ مغربی کنارے میں قابض اسرائیلی فورسز کی فائرنگ کے نتیجے میں ایک اور فسطینی بھی شہید ہوا، شہید ہونے والا فلسطینی شہری 11 برس تک اسرائیلی جیل میں قید رہنے کے بعد ایک سال پہلے ہی رہا ہوا تھا۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق شہید فلسطینیوں کی شناخت جنین شہر سے تعلق رکھنے والے 29 سالہ صدیقی زکارنہ، جنین پناہ گزین کیمپ سے تعلق رکھنے والے 29 سالہ طارق الدمج اور قبطیہ سے 46 سالہ عطا شلابی کے نام سے ہوئی ہے۔

مقامی ذرائع اور عینی شاہدین نے مبینہ طور پر بتایا کہ اسرائیلی فوجیوں نے فوجی بلڈوزر کے ساتھ جنین شہر اور اس کے پناہ گزین کیمپ پر دھاوا بولا، تین فلسطینیوں میں سے 2 فلسطینیوں کو ایک کار سے باہر نکالا گیا تھا، اور انھیں براہ راست اور جان بوجھ کر قتل کیا گیا۔

وحشیانہ حملے کے دوران فلسطینی شہریوں اور اسرائیلی فوجیوں کے درمیان جھڑپیں شروع ہوئیں، جس کے دوران فورسز نے براہ راست گولیاں چلائیں جس سے 10 فلسطینی زخمی اور تین کو گرفتار کر لیا گیا۔

مقبوضہ ویسٹ بینک میں اسرائیل کے ہاتھوں 3 دن کے اندر بغیر کسی جواز کے 10 فلسطینیوں کو قتل کیا گیا ہے۔

وزارت صحت کے مطابق مغربی کنارے کا شہر جنین گزشتہ چند مہینوں میں اسرائیلی جارحیت اور فوجی کارروائیوں کا مرکز رہا ہے، صرف جنین میں سال کے آغاز سے اب تک اسرائیلی فورسز کے ہاتھوں تقریباً 55 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں، جن میں الجزیرہ کی تجربہ کار صحافی شیرین ابو عاقلہ بھی شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں